Wednesday , December 19 2018

تلگودیشم مخالف تلنگانہ پارٹی، عوامی مسائل پر کوئی توجہ نہیں،کسانوں کے مسائل پر مگر مچھ کے آنسو، کانگریس قائد جیون ریڈی کا بیان

حیدرآباد /10 اکتوبر (سیاست نیوز) کانگریس کے ڈپٹی فلور لیڈر جیون ریڈی نے تلگودیشم کو مخالف تلنگانہ پارٹی قرار دیتے ہوئے کہا کہ عوام کی آنکھوں میں دھول جھونکنے کے لئے بس یاترا کی جا رہی ہے۔ آج سی ایل پی آفس اسمبلی میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ تلنگانہ کی مخالفت کے بعد تلگودیشم عوامی اعتماد سے محروم ہو چکی ہے، صرف بی جے پی سے اتحاد کی بدولت اس کے چند ارکان اسمبلی منتخب ہوئے ہیں، لیکن آج وہ بھی تلگودیشم میں گھٹن محسوس کر رہے ہیں اور پارٹی میں موجود سیما۔ آندھرا لابی کی سرگرمیاں اور تلنگانہ عوام کی پارٹی کے خلاف برہمی دیکھ کر مستعفی ہو رہے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ تلگودیشم کو عوام بالخصوص کسانوں کے مسائل سے کوئی دلچسپی نہیں ہے۔ تلنگانہ میں پارٹی کے وجود کو برقرار رکھنے کے لئے تلگودیشم ارکان اسمبلی نے بس یاترا شروع کرتے ہوئے کسانوں کے مسائل پر مگرمچھ کے آنسو بہائیں گے۔ جیون ریڈی نے کہا کہ صدر تلگودیشم چندرا بابو نائیڈو نے تلنگانہ اور آندھرا کو اپنی دو آنکھ قرار دیا تھا، مگر اب وہ تلنگانہ میں برقی بحران کا تماشہ دیکھ رہے ہیں۔ علاوہ ازیں تلنگانہ کے تلگودیشم قائدین بھی آندھرا سے تلنگانہ کے لئے برقی سربراہی کے معاملے میں مسٹر نائیڈو پر دباؤ ڈالنے میں ناکام ہیں۔ انھوں نے تلنگانہ کے تلگودیشم قائدین پر زور دیا کہ وہ مسٹر نائیڈو پر دباؤ ڈالتے ہوئے تلنگانہ کو برقی دینے کے لئے راضی کریں۔ انھوں نے کہا کہ ٹی آر ایس حکومت نئے کارڈس کے نام پر موجودہ راشن کارڈس کو برخاست کرنے کی کوشش کر رہی ہے، تاہم کانگریس پارٹی عوامی مسائل پر کوئی سمجھوتہ نہیں کرے گی۔ انھوں نے راشن کارڈس کو برخاست کرنے کی تجویز سے دست برداری اختیار کرنے تلنگانہ حکومت کو مشورہ دیا اور کہا کہ 4 ماہ میں ٹی آر ایس حکومت نے بوگس کارڈس کے نام پر 10 لاکھ راشن کارڈس کو برخاست کردیا۔

TOPPOPULARRECENT