Saturday , February 24 2018
Home / شہر کی خبریں / تلگودیشم کے 4 سالہ دور میں خواتین کی حق تلفی : جگن

تلگودیشم کے 4 سالہ دور میں خواتین کی حق تلفی : جگن

حیدرآباد ۔ 21 ۔ نومبر : ( سیاست نیوز ) : صدر وائی ایس آر کانگریس و قائد اپوزیشن آندھرا پردیش جگن موہن ریڈی نے کہا کہ تلگو دیشم کے 4 سالہ دور حکومت میں سب سے زیادہ خواتین کی حق تلفی ہوئی اور ان کے ساتھ نا انصافی ہوئی ہے ۔ انہوں نے پدیاترا کے دوران خواتین کے جلسہ سے خطاب میں کہا کہ آبادی کا نصف حصہ رہنے والی خواتین کو تلگو دیشم دور میں نظر انداز کردیا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ دھوکہ دینے والوں کو اقتدار پر برقرار رہنے کا کوئی حق نہیں ہے ۔ انتخابات کے دوران چندرا بابو نائیڈو نے بیلٹ شاپس بند کرنے کا اعلان کیا ۔ اقتدار کے 4 سال مکمل ہونے کے باوجود وعدے پر عمل نہیں کیا ۔ غریب بچوں کی تعلیم ماں باپ پر مالی بوجھ بن جانے کا دعویٰ کیا ۔ وائی ایس آر کانگریس کو اقتدار حاصل ہونے پر غریب افراد کے دو بچوں پر 15 ہزار روپئے کے حساب سے 30 ہزار روپئے کی مالی امداد دینے کا اعلان کیا ۔ انجینئرنگ تعلیم حاصل کرنے والے طلبا کیلئے حکومت صرف 35 ہزار روپئے فیس ادا کررہی ہے جبکہ وہ مکمل فیس ادا کریں گے ۔ ہاسٹلس میں مقیم طلبہ کیلئے علحدہ 20 ہزار روپئے دینے کا اعلان کیا ۔ وظیفہ 2 ہزار روپئے دینے کا اعلان کرتے ہوئے غریب ایس سی ، ایس ٹی ، بی سی اور اقلیتوں کی حد عمر 45 سال کرتے ہوئے انہیں وظیفہ دینے کا اعلان کیا ۔ دیہی علاقوں میں جنہیں مکانات نہیں ہے تمام غریب عوام کو مکانات تعمیر کر کے دینے کا وعدہ کیا ۔ دیہی علاقوں میں دیہی سکریٹریٹ کا آغاز کرتے ہوئے تین دن میں گھر ، پنشن ، راشن ، فیس ری ایمبرسمنٹ منظور کرنے کے اقدامات کرنے کا اعلان کیا ۔ غریب عوام کے مکانات کو 200 یونٹس تک مفت برقی سربراہ کرنے کا اعلان کیا ۔

TOPPOPULARRECENT