تمام طبقات کی بھلائی اولین ترجیح، مسلمانوں کو تحفظات کے وعدہ پر قائم

اسمبلی نتائج دراصل عوام کی جیت، مخلوعہ جائیدادوں پر جلد تقررات، کے سی آر کی پریس کانفرنس

حیدرآباد ۔ 11۔ ڈسمبر (سیاست نیوز) ٹی آر ایس کے سربراہ و کارگزار چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے اسمبلی انتخابات میں بھاری کامیابی کو عوام کی جیت قرار دیا ۔ نتائج کے اعلان کے بعد تلنگانہ بھون میں پرہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کے سی آر نے دوسری میعاد میں عوام کی فلاح و بہبود اور ریاست کی ترقی کو پہلی میعاد کی طرح ترجیح دینے کا اعلان کیا۔ انہوں نے کہا کہ تمام طبقات کی خوشحالی ، غربت کا خاتمہ اور کسانوں کی بھلائی ان کی اولین ترجیح ہوگی۔ کے سی آر نے مسلمانوں اور ایس ٹی طبقات کو تحفظات میں اضافہ کے وعدہ پر قائم رہنے کا اعادہ کیا اور کہا کہ حکومت اس سلسلہ میں سنجیدگی سے اقدامات کرے گی کیونکہ علحدہ تلنگانہ ریاست میں مسلمانوں اور گریجنوں کی آبادی میں اضافہ ہوا ہے۔ حکومت پسماندگی کی بنیاد پر تحفظات میں اضافہ کا منصوبہ رکھتی ہے۔ کے سی آر نے نے نوجوانوں کو تیقن دیا کہ سرکاری محکمہ جات میں مخلوعہ جائیدادوں پر جلد از جلد تقررات کئے جائیں گے۔ سرکاری ملازمتوں میں نوجوانوں کو بہتر مواقع فراہم کرنے کی کوشش کی جائے گی ۔ انہوں نے کہا کہ اقلیتوں کی بھلائی کیلئے پہلی میعاد میں جو اقدامات کئے گئے تھے، اسے اضافہ کے ساتھ جاری رکھا جائے گا۔ اقلیتی بہبود کا بجٹ ملک کی کسی بھی ریاست سے تلنگانہ میں زیادہ ہے۔ دوسری میعاد میں تمام اقلیتوں کی ترقی اور فلاح و بہبود کے اقدامات کئے جائیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ ٹی آر ایس کی کامیابی میں کسانوں ، خواتین ، دلتوں ، اقلیتوں اور پسماندہ طبقات کا مکمل تعاون اور تائید شامل ہے۔ ان تمام کے آشیرواد سے ٹی آر ایس کو کامیابی حاصل ہوئی جس کے لئے میں شکرگزار ہوں۔ انہوں نے پارٹی قائدین اور کارکنوں سے بھی اظہار تشکر کیا جو گزشتہ تین ماہ سے انتخابی مہم میں مصروف رہے۔ کے سی آر نے کہا کہ نتائج توقع کے مطابق ہے اور قائدین اور کارکنوں کو چاہئے کہ وہ تکبر اور غرور سے گریز کرتے ہوئے بردباری کا مظاہرہ کریں۔ انتخابات کے دوران ایک دوسرے کے خلاف باتیں کہی جاتی ہیں لیکن اب ہمیں عوام کی دی ہوئی ذمہ داری کو پورا کرنے پر توجہ دینا ہے۔ کے سی آر نے کہا کہ ریاست میں ایک کروڑ ایکر اراضی کو پانی سیراب کرنے کے نشانہ کی تکمیل ضروری ہے۔ عوام نے آبپاشی پراجکٹس کی تکمیل کے حق میں ووٹ دیا ہے اور ہمیں ان کی توقعات پر پورا اترنا ہے۔ چیف منسٹر نے کہا کہ کسانوں کے تمام مسائل کی یکسوئی حکومت کی اولین ترجیح ہوگی۔ گریجن طبقات کے اراضی کے مسائل کو اندرون چھ ماہ حل کردیا جائے گا ۔ وہ چاہتے ہیں کہ کوئی غریب بھی پریشان حال نہ رہے۔ کے سی آر نے اعتراف کیا کہ ملازمتوں کے سلسلہ میں نوجوانوں میں مایوسی ہے۔ سرکاری محکمہ جات میں جو بھی جائیدادیں مخلوعہ ہیں ، ان پر تیزی سے بھرتی کی جائے گی ۔ انہوں نے کہا کہ بڑی کامیابی سے ذمہ داری میں مزید اضافہ ہوچکا ہے ۔ خوشحال اور پرامن تلنگانہ کا قیام ان کا مقصد ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کنٹی ویلوگو پروگرام کے دوران آنکھوں کے معائنہ کا عمل جلد مکمل ہوجائے گا جس کے بعد ای این ٹی ڈاکٹرس اور پھر ڈینٹل ڈاکٹرس کو گاؤں گاؤں روانہ کرتے ہوئے عوام کا علاج مفت میں کیا جائے گا ۔ تلنگانہ کے ہر شہری کا ہیلت اسٹیٹس حکومت تیار کرے گی ۔ انہوں نے کہا کہ اعلیٰ طبقات سے تعلق رکھنے والے غریب افراد نے ان کے لئے اقامتی اسکولوں کے قیام کی اپیل کی ہے ۔ حکومت اس سلسلہ میں اقدامات کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ کے ایک بھی پولنگ اسٹیشن پر ری پولنگ کی ضرورت محسوس نہیں ہوئی اور ایک بھی واقعہ کے بغیر پرامن انتخابات کا انعقاد ملک کے لئے ایک مثال ہے۔ تلنگانہ ریاست کا یہ پہلا الیکشن ہے اور لاء اینڈ آرڈر پر مکمل کنٹرول رہا ۔ بدعنوانیوں کے واقعات کے بغیر آزادانہ و منصفانہ رائے دہی ہوئی۔ انہوں نے بعض مقامات پر رقومات کی تقسیم کو افسوسناک قرار دیا ۔ چیف منسٹر نے پولیس اور الیکشن کمیشن کی ستائش کی اور خاص طور پر چیف الیکٹورل آفیسر اور الیکشن اسٹاف کی خدمات کو سراہا۔

TOPPOPULARRECENT