Tuesday , December 12 2017
Home / جرائم و حادثات / تمباکو سے ہر سال دنیا بھر میں70لاکھ اموات

تمباکو سے ہر سال دنیا بھر میں70لاکھ اموات

پبلک گارڈن واکرس اسوسی ایشن کا ماہانہ ہیلتھ لیکچر
حیدرآباد 8اکتوبر(یواین آئی )پبلک گارڈن واکرس اسوسی ایشن کا ما ہا نہ ہیلتھ لیکچربمقام اندرا پریہ درشنی آڈیٹوریم باغ عامہ حیدرآباد میں بصدارت غلام یزدانی ایڈوکیٹ صدر واکرس اسوسی ایشن منعقد ہوا۔اسے ڈاکٹر ارشد حکیم سینئر کنسلٹنٹ آنکالوجی وسرجن اپولو اسپتال نے ‘تمباکوکینسرکاسبب”خطاب کیا۔انہوں نے کہا کہ کہ دنیا نے آج تک کئی قسم کی وبا دیکھی ہے جس سے بڑے پیمانے پر اموات اور تباہیاں ہوئیں لیکن تمباکو کا معاملہ ان سب سے بڑھ چڑھ کر ہے ۔ آج یہ نسلِ انسانی کے وجود کیلئے بڑا خطرہ بن گیا ہے ۔ یہ مرض ہر سال دنیا میں7ملین یعنی 70لاکھ انسانی جانیں لے رہا ہے ۔ ان میں 60لاکھ ایسے ہیں جو تمباکو استعمال کرتے ہیں اور دس لاکھ ایسے ہیں جو تمباکو کے دھویں سے متاثر ہوکر اپنی جان گنواتے ہیں ۔ اس طرح اگر تمباکو چاہے کسی شکل میں ہو استعمال سے گریز کریں تو ہلاکتوں سے بچ سکتے ہیں ۔ تمباکو میں 4000کمیکلس ہوتے ہیں جن میں 250نقصان دہ ہیں اور 40مرض کینسر کا سبب ہوتے ہیں ۔ایک اندازے کے مطابق وقت واحد میں دنیا میں دس کروڑ لوگ تمباکو کے استعمال میں مشغول رہتے ہیں ان میں 80فیصد کم آمدنی والے طبقوں سے تعلق رکھتے ہیں ، جیسے ہمارا دیس ۔ اسی لیے ہمارے ملک میں کینسر سے متاثر تعداد زیادہ ہے ۔ اس مرض کے متلی ، قے ، سردرد، عضلات کی کمزوری اور چکّر علامات ہیں جو بچوں میں بہت نمایاں ہوتے ہیں۔ جو افراد سگریٹ نوش نہیں ہوتے وہ بھی عام مقامات جیسے ہوٹلس، دفاتر اور بند غیر ہوادار مقامات کی فضاء سے بھی متاثر ہوجاتے ہیں ۔ چھوٹے بچوں میں بعض مرتبہ تمباکو کا دھواں جان لیوا ہوتا ہے ۔ تمباکو استعمال کرنے والی خواتین کے بچے کم وزن کے ہوتے ہیں ۔ تمباکو سے فضاء کی آلودگی ہرسال تقریباً 6 لاکھ اموات کا باعث ہوتی ہے ۔ہمارے ملک میں ان خامیوں پر مزید توجہ دینے کی ضرورت ہے ۔ ان امور کے لیے وقفہ وقفہ سے سروے کی بھی ضرورت ہے ۔ تمباکو کا دھواں تنفسی بیماریایوں کے علاوہ خون کی روانی میں رکاوٹ اور جگر کے کینسر کا سبب ہوتا ہے ۔ تمباکو کو چبانے اور اس کے کسی شکل میں استعمال سے نہ صرف شش بلکہ قلب اور فالج بھی لاحق ہوسکتا ہے ۔مسٹر غلام یزدانی چیرمین پبلک گارڈن واکرس اسوسی ایشن نے ہیلتھ لیکچرنے سامعین کو مشورہ دیاکہ وہ چہل قدمی کے تین فوائد کو پیش نظر رکھیں ایک تو طبعی ورزش ‘ دوسرے آکسیجن سے پُر ماحول اور تیسرے ہر جانب سبزہ پر نظر اور اگرچہل قدمی نہ کریں تو دوسرے دو فوائد سے مستفید ہوسکتے ہیں ۔ اس کا ذکر بھی بیجا نہ ہوگا کہ سامعین میں شہر حیدرآباد کے نواحی علاقوں کے علاوہ بعض اضلاعی افراد کی شرکت میں اضافہ ہورہا ہے ۔سوال و جواب کا سیشن بھی معلومات اور گہری توجہ کا باعث ہوا۔ پروفیسر آنند راج ورما نے کچھ اردو اشعار اور کہاوتوں سے کاروائی کی ابتداء کی ۔ سری نواس مارکیٹنگ مینیجر نے مہمان مقرر کا تعارف کروایا۔ ڈائس پر نائب صدر پی کے کیڈیاکے علاوہ سکریٹری وشواناتھ اگروال اور سوہن لال کیڈل جائنٹ سکریٹری بھی موجود تھے ۔ بڑی تعداد میں سامعین نے شرکت کی۔

 

TOPPOPULARRECENT