Saturday , November 25 2017
Home / ہندوستان / تنوع سے عدم رواداری، ناراضگی باعث تشویش نائب صدرجمہوریہ محمد حامدانصاری کی تقریر

تنوع سے عدم رواداری، ناراضگی باعث تشویش نائب صدرجمہوریہ محمد حامدانصاری کی تقریر

پونے ۔ 17 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) نائب صدرجمہوریہ محمد حامد انصاری نے آج کہا کہ یہ فکرمندی کی وجہ ہے کہ عدم رواداری کی فضاء میں اضافہ ہوتا جارہا ہے۔ تنوع سے عدم رواداری اور ناراضگی ظاہر کی جارہی ہے۔ انہوں نے پرزور انداز میں کہا کہ سماجی اتفاق رائے مساوات، انصاف اور بااختیاری کے بارے میں پیدا کیا جانا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ اس بات کو یقینی بنانا ضروری ہیکہ سماجی اتفاق رائے مساوات، انصاف اور بااختیاری کے بارے میں موجود ہو۔ ایسا اس لئے بھی ہے کیونکہ آج اتفاق رائے کی عدم موجودگی اور عدم رواداری میں اضافہ باعث تشویش بن گیا ہے۔ تنوع سے اظہارناراضگی کیا جارہا ہے۔ نائب صدرجمہوریہ ’’سماجی اختراعات اور ہم آہنگی‘‘ کے موضوع پر پونے بین الاقوامی مرکز میں تقریر کررہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ یہ رواداری کا عبوری دور ہے اسے قبول کرنا چاہئے۔ دورقدیم میں رواداری روزمرہ کا معمول تھا۔ سیاسی طریقہ کار کا کوئی منتر نہیں تھا۔ اسی وجہ سے اس کی اہمیت بھی تھی۔ موجودہ دور میں یہ انتہائی اہم ہیکہ ہم سماج کو سب کو ساتھ لیکر چلنے والا بنائیں اور منتخب کرکے ان کے ساتھ رواداری کا سلوک نہ کریں۔ محمد حامد انصاری نے مختلف تشخص پر مبنی تکثیری معاشرہ کے قیام کی ضرورت پر زور دیا اور کہا کہ اگر ایسا نہ ہو تو ہمارا ملک صرف اکثریتی جمہوریت اور مراعات سے محروم اقلیتوں کا ملک بن کر رہ جائے گا۔ انہوں نے کہاکہ دستور اقلیتی حقوق کے تحفظ کی دفعات رکھتا ہے۔ سماجی اختراعات اسی وجہ سے خیرسگالی، آزادی، استحکام اور صیانت کے سماج میں غلبہ سے مربوط ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مساوات، شراکت داری، بنااختیاری اور انصاف جمہوری معاشروں کی بنیادی اقدار ہیں۔

TOPPOPULARRECENT