Tuesday , December 18 2018

تنڈولکر کا ’بال بوائے‘ سے کرکٹ ورلڈ کپ کا فاتح بننے کا سفر

دبئی، 2 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستان کے مایہ ناز سابق کرکٹ اسٹار سچن تنڈولکر نے آئی سی سی کی ویب سائٹ پر لکھی اپنی تحریر میں کہا ہے کہ ’’25 جون 1983ء کو جب ہندوستان نے پہلی مرتبہ ورلڈ چمپئن بننے کا اعزاز حاصل کیا تو اس وقت میری عمر دس برس تھی۔ والدین نے مجھے رات دیر گئے تک دیگر لڑکوں کے ساتھ جشن منانے کی اجازت دی۔ اس دن کے بعد سے میرا ہا

دبئی، 2 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستان کے مایہ ناز سابق کرکٹ اسٹار سچن تنڈولکر نے آئی سی سی کی ویب سائٹ پر لکھی اپنی تحریر میں کہا ہے کہ ’’25 جون 1983ء کو جب ہندوستان نے پہلی مرتبہ ورلڈ چمپئن بننے کا اعزاز حاصل کیا تو اس وقت میری عمر دس برس تھی۔ والدین نے مجھے رات دیر گئے تک دیگر لڑکوں کے ساتھ جشن منانے کی اجازت دی۔ اس دن کے بعد سے میرا ہارڈ بال سے کرکٹ کھیلنا شروع ہوگیا‘‘۔ انھوں نے کہا کہ ’’میرا پہلا براہ راست ورلڈ کپ 1987ء کا تھا جو ہندوستان اور پاکستان میں کھیلا گیا تھا۔اس ایونٹ میں خوش قسمتی سے مجھے ممبئی میں منعقدہ ایک میچ میں ’بال بوائے‘ کی ذمہ داری ملی۔ میں نے اپنے سامنے عظیم کھلاڑیوں کو ایکشن میں دیکھا اور اس وقت سوچا کہ ایک دن مجھے بھی ان کی جگہ کھیلنا ہے‘‘۔ واضح رہے کہ آئی سی سی نے اپنی ویب سائٹ پر سابق اسٹار کھلاڑیوں سے ورلڈ کپ کے تجربات سے متعلق مضامین لکھوانے شروع کئے ہیں۔ اس سیریز کی پہلی تحریر سچن تنڈولکر نے لکھی ہے۔ اس کے جاری کردہ رائٹرز کے پہلے شیڈول میں تنڈولکر، اسٹیفن فلیمنگ، جاوید میانداد، سرویوین رچرڈز، کلائیولائیڈ، پال کالنگ ووڈ، بلویندر سنگھ سندھو، ایلن بارڈر اور انضمام الحق شامل ہیں۔ ان کھلاڑیوں کی تحریریں ایک، ایک کرکے روزانہ شائع ہوں گی۔ اگلے دو کالم سابق کیوی کپتان فلیمنگ اور پاکستانی لجنڈ میانداد کے ہوں گے۔

TOPPOPULARRECENT