Monday , December 18 2017
Home / مذہبی صفحہ / تکبیر تشریق

تکبیر تشریق

مرسل : ابوزہیر
تکبیر تشریق ۹؍ذوالحجۃ الحرام کی فجر سے لیکر ۱۳؍ ذوالحجۃ الحرام کی عصر کی نماز تک {اس سال جمعرات کی فجر تا پیر کی عصر تک} ایک مرتبہ واجب اور تین مرتبہ مستحب ہے۔ تکبیر تشریق یہ ہے
اﷲ أکبر اﷲ أکبر لآ الٰہ الا اﷲ واﷲ أکبر اﷲ أکبر وﷲ الحمد
عید الأضحی کے دن تکبیر آواز سے کہنا چاہئے
حضرت حسن بن علی رضی اﷲ عنہما نے فرمایا کہ ’’حضور اکرم صلی اﷲ علیہ وسلم نے ہم کو اس بات کا حکم فرمایا کہ عیدالأضحی کے دن ہم اپنے پاس موجود سب سے بہتر لباس پہنیں، اور سب سے عمدہ خوشبو استعمال کریں اور سب سے موٹے جانور کی قربانی دیں اور گائے سات اشخاص کی طرف سے اور اونٹ بھی سات اشخاص کی جانب سے پر وقار اور پر سکون طور پر تکبیر بلند کریں‘‘۔ {مفہوم حدیثِ بیھقی}
رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کس طرح
قربانی کرتے تھے
حضرت رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم مدینہ منورہ کو ہجرت کرنے کے بعد ہمیشہ قربانی دیتے رہے اور ہر سال دو دنبوں کی قربانی کیا کرتے تھے، ایک اپنی جانب سے اور ایک اپنی امت کی جانب سے۔
حضور صلی اللہ علیہ وسلم قربانی کے جانور کو بنفس نفیس اپنے ہاتھوں سے ذبح فرماتے تھے، جیسا کہ حضرت انس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ ’’رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے دو خوش رنگ سینگ والے مینڈھوں کی قربانی کی۔ ان دونوں کو اپنے ہاتھوں سے ذبح فرمایا اور اس پر اللہ کا نام لیا اور تکبیر کہی۔ میں نے ان بکروں کی گردنوں پر حضور صلی اللہ علیہ وسلم کو اپنا قدم مبارک رکھے ہوئے دیکھا اور پھر آپ نے فرمایا ’’بسم اللہ واللہ اکبر‘‘۔
(بخاری و مسلم)

TOPPOPULARRECENT