Saturday , December 16 2017
Home / اضلاع کی خبریں / تکلیف دہ فیصلہ مسلط کرنے کا حکومت پر الزام

تکلیف دہ فیصلہ مسلط کرنے کا حکومت پر الزام

موضع کونگرا کلاں میں جدید کلکٹریٹ کے قیام کی شدید مخالفت ‘ کانگریس کا احتجاج

شادنگر ۔ 29 ؍ اکٹوبر ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) رنگاریڈی ضلع کی جدید کلکٹر آفس کا قیام ضلع رنگاریڈی کے موضع کونگرا کلاں میں قائم کئے جانے کے خلاف شادنگر کے کانگریس پارٹی قائدین نے قدیم قومی شاہراہ نمبر 7 واقع ایم ڈی آفس کے روبرو خصوصی شامیانہ نصب کرتے ہوئے ایک روزہ احتجاجی دھرنا منظم کیا ۔ احتجاجی دھرنا پروگرام سے سابق رکن اسمبلی چولہ پلی پرتاب ریڈی نے مخاطب کرتے ہوئے موضع کونگرا کلاں میں جدید کلکٹریٹ کے قیام کی شدید مخالفت کی ۔ جدید کلکٹر آفس قیام عمل میں لانے سے قبل تلنگانہ حکومت عوامی رائے اور اپوزیشن سے مشاورت کے بعد فیصلہ لینے کے بجائے حکومت کی جانب سے لئے گئے فیصلہ کو عوام پر مسلط کرنے کا الزام عائد کیا ۔ جبکہ موضع کونگرا کلاں شادنگر حلقہ چیوڑلہ حلقہ ‘ سیری لنگم پلی حلقہ اور راجندر نگر حلقہ کی عوام کے لئے کافی تکلیف دیئے مقام قرار دیا ۔ موضع کو نگراکلاں کو مذکورہ تمام حلقوں کے کسی بھی مقام سے نہ ہی بس کی سہولت ہے اور نہ ہی ٹرین کی سہولت ہے ۔ اگر تمام آدمی جدید کلکٹر آفس میں کسی کام کے لئے جانے کے لئے کار یا پھر ٹو وہیلر گاڑی کے ذریعہ ہی وہاں پہنچ سکتا ہے ۔ تلنگانہ حکومت فوری اپنے فیصلہ میں تبدیلی لاتے ہوئے عام آدمی کی سہولت والے مقام پر یعنی شمس آباد کے آس پاس علاقہ میں جدید کلکٹر آفس قائم کرنے پر زور دیا ۔ احتجاجی دھرنا پروگرام میں شامل تمام کانگریسی قائدین ‘ جے اے سی قائدین اور شادنگر موظف حضرات اور دیگر مقامی عوام نے موضع کو نگرکلاں میں کلکٹریٹ کے قیام کو سخت الفاظ میںمذمت کرتے ہوئے حکومت تلنگانہ کے خلاف نعرے بلند کئے اس موقع پر احتجاجی دھرنا پروگرام میں حصہ لینے والوں میں کانگریس پارٹی قائدین میں بالراج گوڑ ‘ فرخنگر منڈل کانگریس پارکی صدر وینکٹیشورگوڑ‘ محمد علی خان بابر سابق ڈپٹی سرپنچ شادنگر ‘ نائب صدر ایم پی پی نریندرریڈی ‘ ستیہ ڈی سرینواس کے علاوہ سینئر کانگریس پارٹی قائد وانی یادیا ’ ممتاز علی خان ‘ کونسلر وجئے ریڈی ‘ پرکاش گوڑ اور دوسرے موجود تھے ۔ کانگریس پارٹی کے احتجاج دھرنا پروگرام کو بی جے پی قائدین نے تائید کی ۔

 

TOPPOPULARRECENT