Tuesday , December 11 2018

تھائی لینڈ میں نوجوان طبقہ منشیات کا عادی

نشہ کے عادی افراد کی بازآباد کاری کی کوششوں میں ناکامی

نشہ کے عادی افراد کی بازآباد کاری کی کوششوں میں ناکامی
بنکاک ۔ 19ڈسمبر۔( سیاست ڈاٹ کام ) تھائی لینڈ کے وزیر انصاف پائبون کھمپاچا نے آج ایک اہم بیان دیتے ہوئے کہاکہ آسیان ممالک میں تھائی لینڈ شاید ایسا واحد ملک ہے جہاں منشیات کے عادی افراد کو بازآباد کرنے کی تمام کوششیں ناکام ثابت ہورہی ہیں۔ اخبار بنکاک پوسٹ نے بھی مسٹر پائبون کے حوالے سے کہا کہ تھائی لینڈ میں منشیات استعمال کرنے کی صورت حال اتنی بدترین ہوچکی ہے کہ قبل ازیں اس کا تصور بھی نہیں کیا جاسکتا تھا ۔ وزیر موصوف نے یہاں منشیات کے عادی افراد کے علاج کیلئے ایک بازآبادکاری مرکز کا افتتاح کرتے ہوئے کہا کہ ملک ایک ’’نارکوٹک ہب‘‘ میں تبدیل ہوگیا ہے جس کے لئے انھوں نے اعداد و شمار بھی پیش کئے اور کہا کہ تھائی لینڈ میں منشیات کے عادی افراد کی تعداد 1.3 ملین ہے جو مجموعی آبادی کا تقریباً 2 فیصد ہے ۔ انھوں نے البتہ تاسف کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ منشیات کے ایسے عادی جنھیں بازآبادکاری مرکز پر علاج کیا جاتا ہے وہ بعد ازاں دوبارہ اُسی بری لت میں پڑجاتے ہیں ۔ منشیات کا استعمال کرنے والے زیادہ تر نوجوان ہیں اور سب سے کم عمر منشیات کے عادی کی عمر صرف سات سال بتائی گئی ہے۔

TOPPOPULARRECENT