Saturday , September 22 2018
Home / ہندوستان / تہاڑ جیل میں 2,300 مسلمانوں کے ساتھ 150 ہندو قیدیوں نے بھی روزہ رکھا

تہاڑ جیل میں 2,300 مسلمانوں کے ساتھ 150 ہندو قیدیوں نے بھی روزہ رکھا

فرقہ وارانہ ہم آہنگی کاشاندار مظاہرہ‘ نمازوں ‘ افطار و سحری کے لئے جیل حکام کی جانب سے انتظامات

فرقہ وارانہ ہم آہنگی کاشاندار مظاہرہ‘ نمازوں ‘ افطار و سحری کے لئے جیل حکام کی جانب سے انتظامات
نئی دہلی۔ 6؍جولائی (سیاست ڈاٹ کام)۔ فرقہ وارانہ ہم آہنگی کی ایک شاندار مثال پیش کرتے ہوئے تہاڑ جیل کے زائد از 150 ہندو قیدیوں نے بھی اپنے ساتھی 2300 مسلم قیدیوں کے ہمراہ روزہ رکھا۔ رمضان المبارک کے آغاز سے ہی ہندو قیدی روزہ رکھ رہے ہیں ۔ اس سال 29جولائی سے رمضان کا آغاز ہواہے ۔ یہ ہندو قیدی پہلے دن سے ہی مسلم ساتھیوں کے ساتھ سحری کرکے روزہ و افطار کررہے ہیں اور انہوں نے مہینہ بھر کے روزہ رکھنے کی اپنی دلی خواہش کا بھی اظہار کیا ہے ۔ ان قیدوں نے جیل کے اندر ہندو مسلم بھائی چارہ کی زندہ مثال قائم کرتے ہوئے اتحاد کو فروغ دینے کا مظاہرہ کیا ہے ۔ ان کی یہ کوشش قابل ستائش ہے ۔

جیل حکام نے کہا کہ وہ ان روزہ داروں کے لئے سحری ‘ افطار اور نمازوں کیلئے تمام انتظامات کررہے ہیں تاکہ روزہ داروں کو کوئی مشکل پیش نہ آئے ۔ تہاڑ جیل کے پی آر او سنیل گپتا نے یہ بات بتائی ۔ نمازوں کی ادائیگی کیلئے قیدیوں کو صاف ستھری جگہ فراہم کی گئی ہے ۔ انہیں افطار میں میوہ جات مٹھائی جیسے جلیبی‘ خشک میوے اور مختلف دیگر اسناکس بھی فراہم کئے جارہے ہیں ۔ سنیل گپتا نے کہا کہ اس مذہبی اور مقدس عمل میں 70خاتون قیدیاں بھی شامل ہیں ۔ ملک بھر کی مختلف جیلوں میں بھی مسلم قیدیوں کی جانب سے رمضان کا ہتمام کیا جاتاہے۔

TOPPOPULARRECENT