Tuesday , November 21 2017
Home / شہر کی خبریں / تیرہ سال تک علحدہ رہنے والے جوڑے کی صلح

تیرہ سال تک علحدہ رہنے والے جوڑے کی صلح

پولیس کی ذہن سازی و ترغیب پر جوڑا دوبارہ آباد
حیدرآباد /13 ستمبر ( سیاست نیوز ) پرانے شہر کے علاقہ میں پولیس نے ایک جوڑے میں صلح کروایا جو 13 سال کے عرصہ سے علحدہ تھے ۔ ان کے بچے بھی بڑے ہوگئے اور ایک لڑکی شادی کی عمر کو پہونچ گئی ۔ بتایا جاتا ہے کہ معمولی بات کے بعد علحدگی ہوئی اور دوریاں بڑھتی گئیں جو 13 سال کے طویل عرصہ بعد آپس میں مل گئے ۔ پولیس کالاپتھر نے ان کی ذہن سازی کی تو ان دونوں کے عقل ٹھکانے آگئے ۔ یہ واقعہ مکہ کالونی علاقہ کے ساکن سید سالم اور مہ جبین کا ہے جو سال 2005 سے علحدہ رہنے لگے تھے ۔ پیشہ سے کار ڈرائیور سالم اور ان کی بیوی مہ جبین ایک ہی محلہ میں قریب قریب رہتے تھے باوجود اس کے دونوں کو آپس میں ملنے اپنی غلط فہمیاں دور کرنے رشتہ کی اہمیت کو سمجھنے کیلئے 13 سال کا عرصہ لگ گیا ۔ گذشتہ دنوں جب خاتون نے کالا پتھر پولیس سے رجوع ہوکر اپنے شوہر کے خلاف شکایت کی تو پولیس نے اس شکایت پر سنجیدگی سے غور کیا ۔ اسسٹنٹ سب انسپکٹر آف پولیس زین العابدین نے مہ جبین کی شکایت پر خصوصی توجہ مرکوز کرتے ہوئے کیس کی نوعیت کو انسپکٹر کالاپتھر رودرا بھاسکر سے رجوع کیا اور ان دونوں عہدیداروں نے ایک دوسرے کے مشورے اور سرکل انسپکٹر کی خصوصی ہدایت پر زین العابدین اے ایس آئی نے مہ جبین اور سالم کو طلب کرتے ہوئے ان کی کونسلنگ کی 13 سال کے عرصہ کے بعد کونسلنگ کو پولیس نے ضروری سمجھا چونکہ اتنے طویل عرصہ بعد دوبارہ آپس میں صلح کی پولیس کو بہت کم امید تھی تاہم اس سلسلہ میں پولیس کا کہنا ہے کہ شکایت گذار خاتون سے بات چیت کے بعد پولیس نے اس بات کو سمجھ لیا کہ خاتون صلح کی خواہش مند ہے ۔ تاہم پولیس نے بتایا کہ خاتون کے ذہن کو تیار کرنے میں بھی انہیں کافی مشقت اٹھائی پڑی اور بڑی مشکل سے اے ایس آئی کالاپتھر زین العابدین نے دونوں میاں بیوی کو آپس میں ملادیا ۔ پولیس کے مطابق سید سالم اپنے تین بچوں اور بیوی کے اخراجات کیلئے ہر ماہ ڈھائی ہزار روپئے دیا کرتا تھا ۔ پولیس نے دونوں کو ایک وکیل کی نگرانی میں ملاکر تحریری کارروائی بھی انجام دے دی اور میاں بیوی 13 سال بعد بات چیت کرتے ہوئے جذباتی انداز میں پولیس اسٹیشن سے اپنے مکانات روانہ ہوگئے ۔

TOPPOPULARRECENT