Tuesday , November 21 2017
Home / ہندوستان / تین طلاق پر سپریم کورٹ میں رائے دینے حکومت یوپی کا فیصلہ

تین طلاق پر سپریم کورٹ میں رائے دینے حکومت یوپی کا فیصلہ

مسلم پرسنل لا بورڈ کا اظہار اعتراض، کل مقدمہ کی سماعت
لکھنؤ 9مئی (سیاست ڈاٹ کام ) اترپردیش حکومت متنازعہ تین طلاق پر اپنی رائے دے گی جس کی 11 مئی سے سپریم کورٹ سماعت کرے گی۔جمعرات سے 5 ججوں کی بنچ نے تین طلاق مقدمہ کی سماعت شروع کردی ہے ۔ یوپی کے وزیر قانون برجیش پاٹھک نے کہا ہے کہ ریاستی حکومت سماعت کے دوران اس پیچیدہ معاملہ پر رائے دینے کو تیار ہے ۔ انہوں نے کہا ”حکومت کو اس سماجی برائی اور عورتوں کو پریشان کرنے کے معاملہ پر بہت تشویش ہے ۔ ہم سماعت کے لئے تیار ہیں”۔تاہم آل انڈیا پرسنل لا بورڈ کے رکن اور سینیئر وکیل ظفریاب جیلانی نے یوپی حکومت کے اپنی رائے دینے کے فیصلہ پر سوال اٹھایا ہے ۔انہوں نے اعتراض کرتے ہوئے کہا ”یوپی حکومت اس معاملہ میں مداخلت کیوں کرے گی جبکہ وہ اس معاملہ میں فریق نہیں ہے انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ نے واضح طور سے کہا کہ جو فریق نہیں ہے وہ اس معاملہ میں مداخلت نہیں کرسکتا۔ مرکزی حکومت آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ جمیعت علما اور آل انڈیا وومن پرسنل لا بورڈ اس کیس کے فریق ہیں۔ یوپی حکومت تین طلاق کے مسئلہ کو بہت سنجیدگی سے لے رہی ہے یہاں تک کہ عورتوں کی بہبود کی ریاستی وزیر ریتا بہوگنا جوشی نے طلاق کے متاثرہ کئی عورتوں سے ملاقات کی ہے ۔ ریاستی حکومت نے تین طلاق کی متاثرہ عورتوں کے لئے پنشن کی بھی تجویز پیش کی ہے اور اس کے لئے وہ تفصیلی رپورٹ تیار کررہی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT