Saturday , November 18 2017
Home / شہر کی خبریں / ت15تا 30 سال عمر کے تین فیصد نوجوان نشیلی عادت کا شکار

ت15تا 30 سال عمر کے تین فیصد نوجوان نشیلی عادت کا شکار

باضابطہ ریکارڈ عدم موجود ، محکمہ آبکاری کی مہم ، سینکڑوں افراد کو نوٹس
حیدرآباد ۔ 17 ۔ اگست : ( سیاست نیوز ) : تلنگانہ کے دارالحکومت حیدرآباد میں 15 تا 30 سال عمر والے نوجوانوں میں 3 فیصد ایسے نوجوان ہیں جو کسی نہ کسی نشیلی عادت کا شکار ہیں اس کا قطعی باضابطہ ریکارڈ نہیں ہے تاہم حالیہ منشیات کے خلاف شروع کی گئی مہم کے دوران محکمہ آبکاری کے عہدیدار اس نتیجے پر پہونچے ہیں جس کی مزید گہرائی میں پہونچکر تحقیقات کی جارہی ہے ۔ منشیات کا اہم ملزم کیلوین کی گرفتاری کے بعد کئی راز فاش ہوئے ہیں ۔ حیدرآباد کے اسکولی طلبہ کے بشمول تلگو فلم انڈسٹری کی اہم شخصیتوں کو تک منشیات کا غلام بنادیا گیا ہے ۔ محکمہ آبکاری نے اس معاملے میں تقریبا 1000 افراد کو نوٹس دی ہے ۔ نوٹس وصول کرنے والوں میں 26 اسکولس اور 27 انجینئرنگ کالجس بھی شامل ہیں ۔ منشیات سربراہ کرنے والے 23 افراد کو گرفتار کیا گیا جن سے پوچھ تاچھ کے دوران کئی اہم معلومات منظر عام پر آئی ہیں ۔ محکمہ آبکاری کے عہدیداروں کو تحقیقات اور پوچھ تاچھ کے دوران حیرت ناک انکشاف یہ ہوا ہے کہ شہر میں نشیلی ادویات حاصل کرنے والوں کی تعداد میں زبردست اضافہ ہوا ہے ۔ پنجاب ، دہلی اور بنگلور کے مقابلے میں حیدرآباد بہت پیچھے ہے مگر منشیات استعمال کرنے والوں کا گراف بڑھا ہے ۔ منشیات سربراہ کرنے والے افراد اپنے گاہکوں کی تعداد میں اضافہ کرنے کے لیے نت نئے طریقوں کا استعمال کیا ہے ۔ عہدیداروں نے 111 اشیاء کو نشیلی ادویات کے طور پر استعمال کرنے کی شناخت کی ہے ۔ جس میں 2 روپئے میں دستیاب ہونے والی نیند کی گولیوں سے 3 ہزار روپئے میں حاصل ہونے والے فی ڈوز ایل ایس ڈی بھی شامل ہیں ۔ گلی کوچوں کے بچے ، کھانسی کی دوا ، وائیٹنر وغیرہ کا استعمال کررہے ہیں ۔ انجینئرنگ کی تعلیم حاصل کرنے والے طلبہ گانجے کے استعمال کو زیادہ اہمیت دے رہے ہیں ۔ اس کے علاوہ 15 تا 30 سال عمر والے نوجوان اپنی اپنی معاشی صورتحال کو پیش نظر رکھتے ہوئے نشیلی اشیاء خریدتے ہوئے اس کا استعمال کررہے ہیں ۔ اس سے اندازہ لگایا گیا ہے کہ شہر کے 3 فیصد نوجوان نشیلی اشیاء استعمال کرنے کے عادی بن گئے ہیں ۔ ایک کے بعد دوسری نشیلی اشیاء کا استعمال کرنے والے نوجوان اپنے نشہ کرنے کی عادت کو تیزی سے بدل رہے ہیں ۔ بالخصوص کھانسی کی ادویہ ، گانجہ ، انجکشن سے حاصل کرنے والے نشے کو تھوڑے دن میں تبدیل کرتے ہوئے دوسری نشیلی اشیاء کو استعمال کرنے پر ترجیح دے رہے ہیں ۔۔

TOPPOPULARRECENT