Saturday , December 16 2017
Home / Top Stories / جئے ہنومان کے نعروں ساتھ گاؤ دہشت گردوں کا 5 مسلمانوں پر حملہ

جئے ہنومان کے نعروں ساتھ گاؤ دہشت گردوں کا 5 مسلمانوں پر حملہ

ہریانہ کی فرید آباد پولیس نے زخمیوں کے خلاف ہی مقدمات درج کرلئے ۔ حملہ آور ہنوز آزاد

بیف رکھنے کا شبہ

فرید آباد 14 اکٹوبر ( سیاست ڈاٹ کام ) گاؤ دہشت گردی کے ایک اور واقعہ میں تقریبا ایک افراد کے ہجوم نے بیف رکھنے کے شبہ میں پانچ مسلمانوں کو بری طرح سے مار پیٹ کی ہے۔ یہ واقعہ ہریانہ کے فرید آباد میں گوسی گاؤں کے قریب پیش آیا ۔ حملہ میں زخمی ہونے والوں میں ایک شخص کی آزاد کی حیثیت سے شناخت ہوئی ہے ۔ یہ معذور شخص ہے اور آٹو ڈرائیور ہے ۔ وہ گوشت بھی سپلائی کرتا ہے ۔ جب آزاد ایک دوکان پر گوشت سپلائی کرنے جا رہا تھا خود ساختہ گاؤ دہشت گردوں نے اس کی گاڑی کو گھیر لیا اور آٹو ڈرائیور کی جانب سے ’ بھارت ماتا کی جئے ‘ اور ’ جئے ہنومان ‘ کا نعرہ لگانے سے انکار پر اسے بری طرح سے مار پیٹ کی ۔ رپورٹ کے بموجب اس ہجوم نے دوسرے چار افراد کو بھی مارپیٹ کی جو اس شخص کو بچانے آگے آئے تھے ۔ حملہ آوروں نے سارے واقعہ کی ویڈیو گرافی کی تھی اور اب یہ ویڈیو سوشیل میڈیا پر وائرل ہوگیا ہے ۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ یہ سارا واقعہ کچھ پولیس اہلکاروں کے سامنے ہوا ہے اور فرید آباد پولیس نے حملہ آوروں کے خلاف کارروائی کرنے کی بجائے حملہ میں زخمی ہونے والوں کے خلاف گوشت اسمگلنگ کا مقدمہ درج کیا ہے ۔ ابھی تک گاؤ دہشت گردوں کے خلاف کوئی مقدمہ درج نہیں کیا گیا ہے ۔ ایک اور اطلاع میں کہا گیا ہے کہ جو گوشت ضبط کیا گیا ہے اسے فارنسک معائنہ کیلئے بھیجا گیا تھا اور لیب رپورٹس میں توثیق ہوئی کہ یہ بیل کا گوشت تھا ۔ متعلقہ ڈی سی پی نے کہا کہ گوشت اسمگل کرنے والوں کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا ہے اور متاثرین کی شکایت پر حملہ آوروں کے خلاف بھی مقدمہ درج کیا جائیگا ۔

TOPPOPULARRECENT