Saturday , January 20 2018
Home / شہر کی خبریں / جائیداد کی خاطر ماں کے قتل کا منصوبہ ناکام، ماں کی ممتا کو سمجھنے سے قاصر، اولاد کی حرکتیں عبرتناک

جائیداد کی خاطر ماں کے قتل کا منصوبہ ناکام، ماں کی ممتا کو سمجھنے سے قاصر، اولاد کی حرکتیں عبرتناک

حیدرآباد 7 جنوری (سیاست نیوز) آخر ماں … ماں ہی ہوتی ہے اور اس کی ممتا کے آگے دنیا کی کوئی چیز مقابلہ نہیں کرسکتی۔ ایک ماں اس کی اولاد چھوٹی ہو یا بڑی مگر اپنی اولاد کو بھوک سے تڑپتے نہیں دیکھ پاتی۔ آج کا انسان مال و دولت کے لئے اپنی ماں کو بھی قتل کرنے تیار ہے اور اس کی نظر میں مال و جائیداد اپنی ماں سے بڑھ کر ہے جو نو ماہ تک اپنے پیٹ میں اولاد کو محفوظ رکھنے، جنم لینے کے بعد اپنے خونِ جگر کو دودھ کی شکل میں اولاد کو پلانے، اولاد کی بھوک اور اس کی ہر طرح کی ضروریات کو اپنی ذات پر ترجیح دیتے ہوئے پال پوس کر بڑا رکنے، اپنی ہر چیز کو اولاد کے لئے قربان کرنے کا جذبہ رکھنے والی ماؤں کے ساتھ انسان ایسی حرکت کرسکتا ہے تو وہ لوگ جن سے ان کے مفادات وابستہ ہوں اور ان کے ساتھ کوئی رشتہ داری نہ ہو تو ایسے افراد کے ساتھ کیا سلوک کرسکتے ہیں۔ شہر کے علاقہ عنبرپیٹ میں پیش آنے والے واقعہ کی تفصیلات کا انسپکٹر اے پی آنند کمار نے انکشاف کیا۔ تفصیلات کے مطابق گول ناکہ تلسی رام نگر کی رہنے والی 45 سالہ کماری زوجہ جنگا ریڈی، جنگا ریڈی کا چند سال قبل انتقال ہوچکا ہے اور اس جوڑے کو تین لڑکیاں سیتا ، سجاتا، لکشمی اور ایک لڑکا شیوا ریڈی ہیں اور ان تمام نے شادیاں رچاکر علیحدہ علیحدہ زندگی گزارنا شروع کردیا اور کماری تنہا گھر میں رہا کرتی ہے۔ جس کے پاس 100 گز پر مشتمل مکان ہے اور وہ اپنی اس ملکیت والے مکان کو کسی اور کو دینا چاہتی تھی اور اس بات کا اس کی اولاد کو علم ہونے پر انھوں نے اپنی ماں کو ہی قتل کرنے کا پلان تیار کردیا اور قتل کی سپاری دینے کیلئے عنبرپیٹ کے رہنے والے رشید سے واٹر ورکس کرکٹ گراؤنڈ کے پاس موجود علی کیفے کے پاس کماری کی چھوٹی بیٹی لکشمی کے شوہر، دیور اور کماری کا بیٹا شیوا ریڈی نے ملاقات کی۔ قتل کے اس پلان کا باوثوق ذرائع سے ایسٹ زون ٹاسک فورس کو علم ہوتے ہی تینوں کو گرفتار کرکے عنبرپیٹ پولیس کے حوالے کردیا ہے اور ان کے پاس سے لوہے کی راڈ کے علاوہ ناریل کاٹنے والی درانتی ضبط کرلی گئی ہے۔ بعدازاں تینوں کو ریمانڈ کردیا گیا اور قتل کے منصوبے میں شامل ہونے والی کماری کی دیگر دو بیٹیوں اور دامادوں کے خلاف بھی تحقیقات کی جارہی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT