Saturday , November 18 2017
Home / ہندوستان / جادھو کی سزائے موت کی فی الفور معطلی کیلئے ہندوستان کا بین الاقوامی عدالت سے مطالبہ

جادھو کی سزائے موت کی فی الفور معطلی کیلئے ہندوستان کا بین الاقوامی عدالت سے مطالبہ

دی ہیگ۔15 مئی (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستان نے گلبھوشن جادھو کی سزائے موت کی فی الفور معطل کرنے کا آج مطالبہ کرتے ہوئے اس اندیشہ کا اظہار کیا کہ بین الاقوامی عدالتِ انصاف میں مقدمہ کی سماعت کے انتقام سے سے قبل ہی پاکستان اس (جادھو) کو پھانسی کے پھندہ پر چڑھاسکتا ہے۔ ہندوستان نے اپنی بحریہ کے سابق ملازم 46 سالہ کلبھوشن کے مقدمہ کی سماعت کا آعاز کے موقع پر بین الاقوامی عدالت سے پرزور انداز میں کہا کہ اس کو گزشتہ سال 3 مارچ کو گرفتار کیا گیا تھا اور پاکستانی فوجی عدالت نے جاسوسی کے الزام میں اس کو سزائے موت دی ہے۔ اقوام متحدہ کے اعلی ترین عدالت ادارہ میں پاکستان کے خلاف قانونی جنگ لڑتے ہوئے ہندوستان نے کہا کہ صورتحال انتہائی سنگین اور فوری نوعیت کی ہے جس کے پیش نظر اس کو مختصر نوٹس پر اس عدالت سے رجوع ہونا پڑا ہے۔ وزارت خارجہ میں جوائنٹ سکریٹری دیپک متل نے اس عدالت سے کہا کہ جادھو کو پاکستان میں قانونی امداد اور قونصلر رسائی کا حق نہیں دیا گیا تھا۔ یہ دونوں پڑوسی ممالک 18 سال قبل بھی بین الاقوامی عدالت انصاف میں ایک دوسرے کے مد مقابل آئے تھے جب پاکستان نے اپنے بحریہ کے ایک طیارے کو مارگرائے جانے کے مسئلہ پر اس عدالت سے مداخلت کی درخواست کی تھی اور اب ہندوستان میں اپنے ایک شہری کو قونصلر رسائی کے حقوق کے مسئلہ کے ساتھ رجوع ہوا ہے اور پاکستان پر کسی معمولی ثبوت کے بغیر ہی ایک جھوٹا مقدمہ چلاتے ہوئے جادھو کو سزائے موت دینے کا الزام عائد کیا ہے۔ سینئر اٹارنی ہریش سالوے نے کہا کہ کسی عدالت میں اپیل کی سماعت کے دوران سزائے موت پر تعمیل نہیں کی جاسکتی اور اگر ایسا کیا گیا تو یہ ویانہ سمجھوتے کی خلاف ورزی ہوگی۔ بین الاقوامی عدالت نے گزشتہ ہفتے جادھو کی سزائے موت پر حکم التوا جاری کیا تھا جس کے بعد سے فوری سماعت شروع ہوئی ہے۔

TOPPOPULARRECENT