Wednesday , November 14 2018
Home / شہر کی خبریں / جاریہ سال انتخابات پر پرانے شہر میں مزید ترقیاتی کاموں کا افتتاح

جاریہ سال انتخابات پر پرانے شہر میں مزید ترقیاتی کاموں کا افتتاح

منصوبوں اور پراجکٹس پر غور ، ماضی کے پراجکٹس ہنوز نامکمل
حیدرآباد۔17جنوری(سیاست نیوز) جاریہ سال کے اواخر میں انتخابات کے انعقاد کی صورت میں پرانے شہر میں مزید ترقیاتی کاموں کے افتتاح کا امکان ہے۔بتایا جا تا ہے کہ مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کے عہدیداروں کو اس بات کی ہدایت جاری کی گئی ہے کہ وہ پرانے شہر کے ترقیاتی منصوبوں میں شامل پراجکٹس کی فہرست تیار کرتے ہوئے ان کی تفصیلات فوری حکومت کو پیش کرے تاکہ ان کے تعمیری و ترقیاتی کاموں کو شروع کرنے کے اقدامات کئے جاسکیں۔جون 2011میں اس وقت کے چیف منسٹر مسٹر این کرن کمار ریڈی نے خلوت میں ملٹی لیول پارکنگ کامپلکس کی تعمیر کیلئے سنگ بنیاد رکھا تھا لیکن اب جبکہ 7سال کا عرصہ گذرنے کو ہے اس سلسلہ میں کوئی ترقیاتی کام شروع نہیں کئے گئے بلکہ خلوت کے علاوہ چارمینار بس اسٹینڈ کے مقام پر ایک اور ملٹی لیول پارکنگ کامپلکس کا منصوبہ تیار کیا گیا ہے۔ بتایاجاتاہے کہ انتخابات سے قبل پرانے شہر میں چیف منسٹر یا ریاستی وزیر بلدی نظم و نسق کے ذریعہ ان پراجکٹس کے لئے سنگ بنیاد رکھوانے کی حکمت عملی تیار کی گئی ہے اور کہا جارہا ہے کہ بجٹ اجلاس سے قبل مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کے عہدیداروں کو دونوں پراجکٹس کے علاوہ دیگر پراجکٹس کی رپورٹس پیش کرنے کی ہدایت دی گئی ہے کیونکہ حکومت اور منتخبہ عوامی نمائندوں کی جانب سے انتخابات سے عین قبل نئے پراجکٹس کا سنگ بنیاد رکھنے کے علاوہ عرصہ دراز سے تکمیل پراجکٹس کے افتتاح کو یقینی بنایا جانا ہے ۔اسی طرح اس مرتبہ بھی ان پراجکٹس کے علاوہ نئے آبرسانی پائپ لائن اور سیوریج لائن وغیرہ کی تنصیب کے کاموں کا بھی افتتاح انجام دیا جائے گا تاکہ پرانے شہر کے رائے دہندوں کو یہ تاثر دیا جاسکے کہ منتخبہ عوامی نمائندے اور حکومت شہر کی ترقی کے سلسلہ میں مصروف ہے ۔جی ایچ ایم سی کے عہدیداروں نے بتایا کہ شہر حیدرآباد بالخصوص پرانے شہر کے زیر تکمیل اور منصوبہ میں شامل پراجکٹس کی تفصیل پیش کرنے کی ہدایت موصول ہوئی ہیں اور جی ایچ ایم سی کی جانب سے آئندہ ماہ کے اواخر تک اس سلسلہ میں مکمل رپورٹ حکومت کو روانہ کردی جائے گی۔باوثوق ذرائع سے موصولہ اطلاعات کے مطابق بجٹ سیشن کے فوری بعد سنگ بنیاد اور افتتاحی پروگرام ہو ں گے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT