Friday , November 24 2017
Home / شہر کی خبریں / جامعہ نظامیہ قوم کی امانت، مالیہ کا استحکام ناگزیر، مولانا مفتی خلیل احمد کا بیان

جامعہ نظامیہ قوم کی امانت، مالیہ کا استحکام ناگزیر، مولانا مفتی خلیل احمد کا بیان

حیدرآباد ۔ 26 اگست (پریس نوٹ) مولانا مفتی خلیل احمد شیخ الجامعہ جامعہ نظامیہ نے اپنے ایک صحافتی بیان میں کہا کہ جامعہ نظامیہ قوم کی امانت ہے۔ حضرت شیخ الاسلام نے اس کو دین کی خدمت کیلئے تقویٰ و توکل اساس پر قائم فرمایا۔ اس کو قائم ہوئے 147 سال مکمل ہورہے ہیں۔ اس دوران جامعہ نے فروغ علوم اسلامیہ اور اصلاح معاشرہ کے سلسلہ میں بلاوقفہ خدمات کا ایک ریکارڈ قائم کیا ہے۔ اس طویل عرصہ میں کئی انقلابات آئے۔ حکومتیں تبدیل ہوئیں اور نظریات میں ردوبدل ہوا لیکن جامعہ نظامیہ شیخ الاسلام حضرت مولانا انوارا اللہ فاروقی قدس سرہ کے مقاصد کے مطابق تسلسل کے ساتھ اپنی خدمات انجام دے رہا ہے۔ جامعہ نے ملک و ملت کو قابل ترین اور تربیت یافتہ افراد فراہم کئے ہیں جنہوں نے علوم اسلامیہ کی ترویج و اشاعت میں ایک تاریخ بنائی ہے۔ ان میں شہرہ آفاق محقق ڈاکٹر محمد حمیداللہ کے علاوہ کئی نام بھی شامل ہیں۔ جامعہ کے اس فارغ التحصیل فرزندان نے اپنے علم و فکر کے اجالے کو اقطاع عالم میں پھیلایا اور اساتذہ جامعہ نظامیہ سے حاصل کردہ علوم و معارف اور فکروفن کی وسیع تر ترویج کے ذریعہ مادر علمیہ کا حق ادا کیا۔ اس طرح شیخ الاسلام بانی جامعہ نظامیہ کے منشاء کی تکمیل مسلسل ہوتی آرہی ہے۔ مولانا نے مزید کہا کہ جامعہ کی اعانت درحقیقت علم دین کی اشاعت میں حصہ لینے کے برابر ہے۔ مولانا نے فرمایا کہ جامعہ نظامیہ کا فیضان احیاء المعارف النعمانیہ، دائرۃ المعارف العثمانیہ اور اشاعت العلوم جامعہ نظامیہ کے نام سے مسلسل جاری ہے اور یہ لامتناہی سلسلہ قوم کی زبردست خدمت انجام دے رہا ہے۔ یہاں کے فارغین درس و تدریس، تصنیف و تالیف اور وعظ و ارشاد کی خدمت میں ہمہ تن مصروف ہیں اور حضرت بانی جامعہ نظامیہ کے مقاصد کی تکمیل کررہے ہیں۔ مولانا نے فرمایا کہ جامعہ کا موجودہ بجٹ تین کروڑ روپئے سے متجاوز ہے۔ مولانا سلسلہ خطاب جاری رکھتے ہوئے مزید کہاکہ قوم و ملت کی تعاون کی وجہ جامعہ روزافرزوں ترقی کررہا ہے جس کے پیش نظر ارباب جامعہ نے دارالاقامہ مطبخ کی قدیم عمارتوں کو منہدم کرکے جدید تعمیر کا آغاز کیا ہے۔ تکمیل طلب تعمیر امور کیلئے اہل خیر حضرات سے تعاون ناگزیر ہے۔ ان عمارتوں کی تعمیر مکمل ہوجانے کے بعد طلبہ کی کثیر تعداد استفادہ کرسکے گی۔ مولانا نے فرمایا کہ جامعہ نے لڑکیوں کیلئے کلیتہ البنات جامعہ نظامیہ (لڑکیوں کا کالج) قائم کیا ہے جس میں 500 طالبات اعلیٰ تعلیم حاصل کررہی ہیں۔ مولانا نے وضاحت کی کہ جامعہ نظامیہ اور کلیتہ البنات میں کس طرح کی کوئی فیس نہیں لی جاتی۔ مولانا نے کہا کہ جامعہ کے مالیہ کے سلسلہ میں عموماً بعض اصحاب کو غلط فہمی ہوتی ہے۔ حقیقت یہ ہیکہ جامعہ کا مالیہ غیرمستقل اور صرف مخلص مسلمانوں کے عطیات پر مبنی ہے۔ جامعہ کو کوئی خارجی یا سرکاری امداد حاصل نہیں ہے۔ ہمارا کام جدوجہد کرنا ہے وہ ہم کررہے ہیں۔ وسائل کو فروغ دینا اور اعمال کو مکمل کرنا اللہ کا کام ہے اور الحمدللہ جامعہ کے معاملات میں توفیق الہٰی شامل حال ہے۔ مولانا نے عامتہ المسلمین سے فرمایا کہ وہ عیدالاضحیٰ کے موقع پر ایک ایک چرم قربانی جامعہ کو عنایت فرمائیں۔ چرم کی وصولی کیلئے شہر میں محصلین کا بھی انتظام کیا گیا ہے۔ انہیں باخذ رسید چرم قربانی عنایت فرمائیں یا صدر مرکز جامعہ نظامیہ شبلی گنج حیدرآباد پر بھی جمع کئے جاسکتے ہیں۔ جامعہ نظامیہ کے فون نمبرات 24416847 ، 24576772 پر مطلع فرمائیں تو کارکن آپ کے پاس آ کر وصولی کا کام انجام دیں گے۔ جامعہ نظامیہ کو آپ کی امداد دراصل اپنی مدد آپ کرنا ہے۔ طالبان علم پر خرچ کرنا بموجب ارشاد نبوی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم ایک ایسی نیکی ہے جو بعد حیات بھی جاری رہتی ہے۔

TOPPOPULARRECENT