Tuesday , July 17 2018
Home / شہر کی خبریں / جامعہ نظامیہ میں عصری آڈیٹوریم کی تعمیر ہنوز نامکمل

جامعہ نظامیہ میں عصری آڈیٹوریم کی تعمیر ہنوز نامکمل

مزید دو ماہ درکار، کنٹراکٹر کی سُست روی کے سبب چیف منسٹر کا وعدہ وفا نہ ہوسکا
حیدرآباد۔14۔ فروری (سیاست نیوز) چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے جامعہ نظامیہ میں عصری آڈیٹوریم کی تعمیر کا اعلان کیا تھا لیکن مقررہ مدت میں آڈیٹوریم کی تکمیل نہ ہوسکی جس سے عہدیداروں اور جامعہ نظامیہ کے ذمہ داروں کو مایوسی ہوئی ہے۔ چیف منسٹر نے انتہائی عصری نوعیت کے آڈیٹوریم کی تعمیر کا اعلان کرتے ہوئے کہا تھا کہ وہ بانی جامعہ نظامیہ کے عرس کے موقع پر سالانہ جلسہ میں شرکت کرتے ہوئے افتتاح کریں گے ۔ بانی جامعہ نظامیہ حضرت انواراللہ فاروقیؒ کا عرس اور جامعہ نظامیہ کا سالانہ جلسہ تقسیم اسناد 16 فروری کو مقرر ہے لیکن چیف منسٹر کے وعدہ کی تکمیل نہ ہوسکی۔ آڈیٹوریم کی تعمیر کے سلسلہ میں آر اینڈ بی کو ذمہ داری دی گئی تھی اور وقف بورڈ کے ذریعہ فنڈس جاری کئے گئے۔ آڈیٹوریم کی جملہ لاگت 14 کروڑ طئے کی گئی جس میں سے مختلف مراحل میں 6 کروڑ روپئے جاری کئے گئے۔ گزشتہ دو ماہ کے دوران حکومت کے مشیر اے کے خاں اور صدرنشین وقف بورڈ محمد سلیم نے 16 فروری سے قبل آڈیٹوریم کی تکمیل کو یقینی بنانے کیلئے بارہا دورہ کیا اور عہدیداروں کو ہدایات جاری کیں۔ اس کے باوجود کنٹراکٹر نے کام میں کوئی تیزی پیدا نہیں کی اور سست روی کے سبب چیف منسٹر کا وعدہ وفا نہیں ہوسکا۔ بتایا جاتا ہے کہ آڈیٹوریم کی تکمیل کیلئے مزید دو ماہ درکار ہوں گے ۔ وقف بورڈ نے کام میں تاخیر کیلئے کنٹراکٹر پر جرمانہ عائد کرنے کا اعلان کیا لیکن آر اینڈ بی عہدیداروں کا کہنا ہے کہ تعمیری کام میں کوئی سستی نہیں برتی گئی اور اب انفراسٹرکچر کی تنصیب کا کام باقی ہے۔ پہلے طئے شدہ منصوبہ کے تحت چیف منسٹر کو سالانہ جلسہ میں مدعو کرتے ہوئے آڈیٹوریم کا افتتاح انجام دینا تھا۔ چیف منسٹر کے اعلان کے باوجود مقررہ مدت میں آڈیٹوریم کی عدم تکمیل سے عہدیداروں کی غفلت اور سستی کا اندازہ لگایا جاسکتا ہے۔ اتنا ہی نہیں چیف منسٹر نے گزشتہ سال رمضان المبارک کے موقع پر نامپلی میں انیس الغرباء کے ہمہ منزلہ کامپلکس کا سنگ بنیاد رکھا تھا۔ اس پراجکٹ کیلئے 20 کروڑ روپئے مختص کئے گئے اور وقف بورڈ نے ایک کروڑ روپئے جاری کردیا لیکن افسوس کہ 10 ماہ گزرنے کے باوجود ابھی تک تعمیری کام کا آغاز نہیں ہوا ہے۔ کنٹراکٹر نے مختلف بہانے بناتے ہوئے ابھی تک پلرس کی تعمیر کیلئے کھدوائی تک نہیں کی۔ انیس الغرباء کی قدیم عمارت کو منہدم کرتے ہوئے نئی عمارت تعمیر کرنا ہے اور ابھی تک قدیم عمارت منہدم نہیں کی گئی۔ چیف منسٹر کی خصوصی دلچسپی سے متعلق پراجکٹس کا یہ حال ہے تو پھر دیگر تعمیری کاموں کے سلسلے میں عہدیداروں کی دلچسپی کا بخوبی اندازہ کیا جاسکتا ہے۔

TOPPOPULARRECENT