Wednesday , December 19 2018

جان کیری مشرق وسطیٰ امن مذاکرات کی بحالی کیلئے پر امید

لندن ، 15 مئی (سیاست ڈاٹ کام) امریکی وزیر خارجہ جان کیری نے فلسطینی اتھارٹی کے صدر محمود عباس سے لندن میں ملاقات کی ہے۔ گزشتہ ماہ مشرق وسطیٰ امن مذاکرات کی ناکامی کے بعد دونوں قائدین پہلی مرتبہ ملے ہیں۔ فلسطینی صدر کی طرف سے حماس کے ساتھ متحدہ حکومت سازی کے فیصلے پر ڈٹے رہنے کے باوجود امریکی وزیر خارجہ جان کیری نے مشرق وسطیٰ امن مذاکر

لندن ، 15 مئی (سیاست ڈاٹ کام) امریکی وزیر خارجہ جان کیری نے فلسطینی اتھارٹی کے صدر محمود عباس سے لندن میں ملاقات کی ہے۔ گزشتہ ماہ مشرق وسطیٰ امن مذاکرات کی ناکامی کے بعد دونوں قائدین پہلی مرتبہ ملے ہیں۔ فلسطینی صدر کی طرف سے حماس کے ساتھ متحدہ حکومت سازی کے فیصلے پر ڈٹے رہنے کے باوجود امریکی وزیر خارجہ جان کیری نے مشرق وسطیٰ امن مذاکرات کی بحالی کی امید ظاہر کی ہے۔ گزشتہ ماہ عباس کی سیاسی پارٹی فتح نے حماس کے ساتھ عبوری حکومت کی تشکیل کا فیصلہ کیا تھا، جس کے بعد اسرائیل نے امن مذاکرات سے دستبردار ہونے کا اعلان کر دیا تھا۔ اسرائیلی وزیر اعظم بنجمن نیتن یاہو کے بقول فتح ایک وقت میں اسرائیل اور حماس دونوں کے ساتھ کوئی سمجھوتہ نہیں کر سکتی ہے۔

یہ امر اہم ہے کہ امریکہ، یورپی یونین اور اسرائیل نے حماس کو ’دہشت گرد گروہ‘ قرار دے رکھا ہے۔ 2007ء سے حماس غزہ کا کنٹرول سنبھالے ہوئے ہے۔ یہ جنگجو گروہ اسرائیل کو بطور مملکت تسلیم نہیں کرتا ہے۔ اسرائیلی وزیر اعظم کے بقول فتح ایک وقت میں اسرائیل اور حماس دونوں کے ساتھ کوئی سمجھوتہ نہیں کر سکتی ہے۔ چہارشنبہ کو لندن کی ایک ہوٹل میں جان کیری اور محمود عباس نے دو گھنٹے تک مذاکرات کئے۔ واشنگٹن حکومت کی طرف سے بتایا گیا ہے کہ کیری دراصل شام کی خانہ جنگی اور یوکرائن کے تنازعے پر مذاکرات کیلئے لندن پہنچے تھے، جہاں انہوں نے عباس سے بھی غیر رسمی ملاقات کی۔ مزید بتایا گیا ہے کہ اس دوران کیری نے تعطل کے شکار امن مذاکرات کی بحالی کے حوالے سے کوئی منصوبہ پیش نہیں کیا ہے۔ امریکی اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ کی ترجمان جنیفر ساکی نے اس ملاقات کے بارے میں تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ وزیر خارجہ نے فلسطینی عوام کے ساتھ تعاون جاری رکھنے کی یقین دہانی کرائی ہے۔ ’’امریکی وزیر خارجہ نے یہ واضح کیا ہے کہ امن کا راستہ ابھی بھی کھلا ہوا ہے۔ تاہم فریقین کو فیصلہ کرنا ہے کہ کیا وہ مذاکرات کی بحالی کیلئے ضروری اقدامات کیلئے تیار ہیں۔‘‘

TOPPOPULARRECENT