Tuesday , June 19 2018
Home / پاکستان / جاوید ہاشمی کا پاکستانی پارلیمان سے مستعفی ہونے کا اعلان

جاوید ہاشمی کا پاکستانی پارلیمان سے مستعفی ہونے کا اعلان

اسلام آباد ۔ 2 ستمبر ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) پاکستان تحریک انصاف کے صدر مخدوم جاوید ہاشمی نے قومی اسمبلی سے مستعفی ہونے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ عمران خان کی بجائے پارلیمنٹ کو کٹہرے میں کھڑا کیا جائے جو عوام کی توقعات پوری نہیں کر سکی، مسلم لیگ ن میں رہتے ہوئے جو کچھ میرے ساتھ ہوا بتا نہیں سکتا، تحریک انصاف کے ارکان اسمبلی نے مجبوراً

اسلام آباد ۔ 2 ستمبر ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) پاکستان تحریک انصاف کے صدر مخدوم جاوید ہاشمی نے قومی اسمبلی سے مستعفی ہونے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ عمران خان کی بجائے پارلیمنٹ کو کٹہرے میں کھڑا کیا جائے جو عوام کی توقعات پوری نہیں کر سکی، مسلم لیگ ن میں رہتے ہوئے جو کچھ میرے ساتھ ہوا بتا نہیں سکتا، تحریک انصاف کے ارکان اسمبلی نے مجبوراً استعفے دیئے ہیں مگر میں اپنی مرضی سے عوام کے پاس جا رہا ہوں، وزیراعظم نواز شریف نے پارلیمنٹ کو کوئی اہمیت نہیں دی وہ 14 مہینے سینٹ میں کیوں نہیں آئے، بے نظیر بھٹو سے کہا تھا کہ پرویز مشرف سے معاملت نہ کریں یہ آپ کو قتل کرا دے گا۔

منگل کو پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ قصور وار ممبران بلکہ پارلیمنٹ ہے جو کہ مسائل حل کرنے میں ناکام رہی ہے۔ ’’میں ایوان میں گواہی دینے آیا ہوں قائداعظم کے فرمودات کے تحت پاکستان میں جمہوری نظام چلنا چاہیے ‘‘۔ انہوں نے پاکستان کی بقاء اور تحفظ کیلئے جان قربان کی ، آج آئین بچانے میں پی پی پی کردار ادا کر رہی ہے ۔ مولانا فضل الرحمن سے مخاطب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اب مطالبہ کرتے ہیں کہ استعفیٰ دینے والے باغیوں کی قومی اسمبلی کی ممبر شپ ختم کریں میں باغی ہوں میرا کیا کرینگے میرے سیاسی عمل میں بہت سے لوگوں سے اختلاف ہیں میں پی ٹی آئی کا منتخب صدر ہوں میں جذباتی فیصلے نہیں کرتا مگر میں جذباتی ضرور ہوں ۔ پارلیمانی نظام کو مستحکم کرنا ہو گا ذوالفقار علی بھٹو کا سپاہی تھا ایک سال ان کے ساتھ رہا ہوں پارلیمانی نظام کو بہتر انداز میں نہ چلانا نواز شریف کی ناکامی ہے یہ لوگوں کے مسائل حل کرنے میں ناکام رہے ہیں۔ عمران خان کے ساتھ آج بھی نوجوانوں کی سب سے زیادہ تعداد ہے عمران خان سسٹم کو ماننے کی بات کرتا ہے

مگر عملی اقدام رہی اس کے برعکس ہے عمران خان سے ذاتی اختلاف نہیں ہے خوشامد پسند نہیں کرتا ہوں ہمیشہ نظام کے لئے لڑا ہوں جمہوری نظام کو ختم کرنے کے لئے ذاتی پسند و ناپسند کو ختم کرنا ہو گا لاہور سانحہ ماڈل ٹائون کی ایف آئی آر کا اندراج کیوں نہیں کیا گیا پارلیمنٹ کے تحفظ کے لئے کسی قربانی سے دریغ نہیں کروں گا۔ ہمارے ملک میں حکومتیں بنانے اور گرانے کا نظام کام کر رہا ہے اس سے کوئی انکار نہیں کر سکتا میرا ذاتی گلہ شکوہ نہیں ہے ، وزیراعظم نواز شریف 14ماہ تک کیوں نہیں گئے ہیں ،سینٹ کو نظر انداز کیوں کیا گیا ۔ عمران خان سے کہا کہ پارٹی کو نظر انداز کریں ان سے کہا کہ سپریم کورٹ کا اختیار نہیں ہے کہ وہ ٹیکنو کریٹس کی حکومت کا قیام عمل میں لائے، مسلم لیگ (ن) نے 14 ماہ میں میرے ساتھ جو زیادتیاں کی ان کو بیان کروں تو پارلیمنٹرین حیران رہ جائینگے ساری زندگی پارلیمنٹ اپنی جمہوریت کے تحفظ کی جنگ لڑ رہی ہے ہمیشہ ایسا ہی کرتا رہوں گا-

TOPPOPULARRECENT