Tuesday , November 21 2017
Home / Top Stories / ’جبری مذہبی تبدیلی، اسلام اور پاکستان میں جرم ‘ : نواز شریف

’جبری مذہبی تبدیلی، اسلام اور پاکستان میں جرم ‘ : نواز شریف

’کون جنت میں اور کون جہنم میں جائیگا یہ فیصلہ کرنا انسان کا کام نہیں‘ ہولی تقریب سے خطاب
کراچی ۔ 14 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) پاکستان کے وزیراعظم نواز شریف نے ہولی کے موقع پر ہندو برادری کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ اسلام اور پاکستان میں دیگر مذاہب کی عبادت گاہوں کو تباہ کرنا اور زبردستی کے ذریعہ کسی کا مذہب تبدیل کروانا ایک سنگین جرم ہے۔ نواز شریف نے ہندوؤں کے ساتھ ہولی منانے کیلئے یہاں منعقدہ ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے اصرار کے ساتھ کہا کہ کون جنت میں جائے گا اور کون جہنم میں  جائے گا یہ فیصلہ کرنا کسی انسان کا کام نہیں ہے بلکہ ہمارا کام پاکستان کو کرہ ارض پر جنت نشان بنانا ہے۔ انہوں نے پاکستانی اقلیتوں کو واضح پیغام دیا کہ ’’کوئی بھی کسی دوسرے کو کوئی مخصوص مدہب قبول کرنے کیلئے زبردستی مجبور نہیں کرسکتا‘‘۔ میاں نواز شریف نے اجتماع سے خطاب کے دوران کہا کہ دینی اسلام ہر انسان کو اس کے مذہب، ذات اور نسل کے امتیاز کے بغیر نمایاں اہمیت دیتا ہے

اور صاف طور پر میں یہ کہہ سکتا ہوں کہ تبدیلی مذہب کیلئے کسی پر زبردستی کرنا ایک جرم ہے اور پاکستان میں اقلیتوں کی عبادت گاہوں کا تحفظ کرنا ہماری ذمہ داری ہے‘‘۔ اقلیتی ارکان پارلیمنٹ اور ہندو برادری سے تعلق رکھنے والی دیگر ممتاز شخصیات نے کثیر تعداد میں اس تقریب میں شرکت کی۔ وزیراعظم نواز شریف نے پاکستان فی الحال ترقی و خوشحالی کے ساتھ پاکستان کو ایشیائی شہر بنانے کے متمنی قوتوں اور دہشت گردوں کے درمیان حالت جنگ میں ہے۔ پاکستان میں مذہب کے مسئلہ پر کوئی لڑائی جھگڑا نہیں ہے بلکہ اگر کوئی لڑائی جاری ہے تو وہ دہشت گردی کے خلاف ہے لیکن شرپسند عناصر محض عوام کو گمراہ کرنے کیلئے مذہب کا استعمال کررہے ہیں۔ بے قصور افراد کو ہلاک کررہے ہیں کیونکہ یہ عناصر خوشحال اور ترقی یافتہ پاکستان دیکھنا نہیں چاہتے۔ ’’کسی مذہب کی مخالفت میں پاکستان کا وجود عمل میں نہیں آیا۔ کسی مذہب کو کمتر سمجھنا غلط ہے۔ میں ایک ایسا پاکستان دیکھنا چا ہتا ہوں جہاں ہر مذہب کے ماننے والے شخص کو مساویانہ مواقع دستیاب رہیں تاکہ وہ اپنے خاندان کے ساتھ ایک خوشحال زندگی گذار سکے‘‘۔

سوشل میڈیا پر گستاخانہ مواد کیخلاف نواز شریف کا انتباہ
اسلام آباد ۔ 14 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم پاکستان نواز شریف نے آج حکام کو ہدایت دی کہ سوشیل میڈیا پر گستاخانہ مواد کے خلاف فوری کارروائی کرتے ہوئے ایسے مواد کو حذف کردیں اور مرتکبین کو سزاء دی جائے۔ نواز شریف کا یہ احکام ایک ہائیکورٹ حکمنامہ کے چند روز بعد سامنے آئے ہیں۔ نواز شریف نے وفاقی وزیرداخلہ چودھری نثار علی خان کو کہا کہ اس گھناونے جرم کے پس پردہ عناصر سے کوئی بھی تاخیر کے بغیر سختی سے نمٹا جانا چاہئے۔ ان کے حوالہ سے بتایا گیا کہ سوشیل میڈیا پر گستاخانہ مواد ساری امت کے مذہبی جذبات کو مجروح کرنے کی ناپاک سازش ہے۔ انہوں نے عدالت کے جاری کردہ رہنمایانہ خطوط کی مطابقت میں ضروری کارروائیوں کا حکم بھی دیا۔ اسلام آباد ہائیکورٹ کے جج شوکت صدیقی نے گذشتہ ہفتے وزارت داخلہ کو ہدایت دی تھی کہ مبینہ مخالف اسلام مواد والے فیس بک صفحات کے خلاف اقدام کریں۔

TOPPOPULARRECENT