Sunday , November 19 2017
Home / اضلاع کی خبریں / جذبات و خیالات کے اظہار کیلئے اردو زبان بہترین وسیلہ : کویتا

جذبات و خیالات کے اظہار کیلئے اردو زبان بہترین وسیلہ : کویتا

کریم نگر14؍فروری( سیاسٹ ڈسٹرکٹ نیوز) اُردو دنیا کی بہترین زبان ہے اور اپنے جذبات اور خیالات کے اظہارکیلئے اُردوایک بہترین وسیلہ ہے ان خیالات کا اظہار رکن پارلیمنٹ نظام آباد مسز کے کویتا نے کیا ۔صدروکنونیر مشاعرہ احمد عبدالملک جگتیال ایجوکیشنل اینڈ شوشیل ویلفیر اسپورٹس سوسائٹی جگتیال کے زیر اہتمام قلعہ میدان میں منعقدہ کُل ہند مشاعرہ’’ ایک شام لتا حیا کے نام‘‘ میں انہوں نے مہمان خصوصی کی حیثیت سے شرکت کی۔جبکہ دیگر مہمانان میں رکن اسمبلی جگتیال مسٹرٹی جیون ریڈی‘ چیئر پرسن بلدیہ مسز ٹی وجے لکشمی دیویندر‘وائس چیئرمین بلدیہ سراج الدین منصور‘حلقہ اسمبلی جگتیال ٹی آر یس انچارج ڈاکٹر سنجے کمار سید فاضل حسین پرویز ایڈیٹر گواہ‘ ٹی آریس قائد رحیم سیفی ‘سید غازی الدین زبیر ‘صدر جامع مسجد سید جمیل احمد‘ اعزازی مہمانا ن میں صدر ملت اسلامیہ محمد ریاض الدین ماما‘ مسیح الدین افسر انجینئر‘ سید محی الدین اسٹا ف رپورٹر سیاست کریم نگر‘محمد نعیم الدین مترجیم ڈی پی آر او ‘محمد عمران ایڈوکیٹ‘ کونسلر عبدالباری‘ سابق چیئرمین گری ناگہ بھوشنم بنڈا شنکرضلع نائب صدر کانگریس‘صدر میانگو اسوسی ایشن محمد امین الدین‘ محمد اقبال احمد منچریال‘ مقبول احمد منچریال‘ منان منچریال جعفر رشید‘ محمد انیس ‘ اور دیگر نے شرکت کی مشاعرہ کی صدارات سکریٹری ؍ڈائرکٹر اُردو اکاڈمی ایس اے شکور نے کی ۔اس موقع پر رکن پارلیمنٹ نظام آباد مسز کے کویتا نے مخاطب کرتے ہوئے جگتیال ایجوکیشنل سوسائٹی کے زیر اہتمام یادگار مشاعرے کے انعقاد پر کنونیر مشاعرہ احمد عبدالملک کو مبارکباد دیتے ہوئے سوسائٹی کی سراہنا کی۔انہوں نے کہاکہ اُردو دنیا کی بہترین زبان ہے مادری زبان کونسی بھی ہو لیکن اپنے جذبات اور خیالات کے اظہارکیلئے اُردوایک بہترین وسیلہ ہے ‘ انہوں نے مثال دیتے ہوئے کہاکہ جب راکیش شرما چاند پر گئے تھے تو اسوقت کی ملک کی وزیر اعظم آنجہانی اندراگاندھی نے ان سے پوچھا تھا کہ ہمارا ملک کیسالگتا ہے انہوں نے اُردو میں کہاتھاکہ’’ سارے جہاں اسے اچھا ہندوستاں ہمارا‘‘جب دل سے کوئی بات نکلتی ہے تو وہ اُردو میں نکلتی ہے اور لوگوں کے روح پر اثر انداز ہوتی ہے لوگوں کی روح پر اثر کرنے والی زبان اُردو ہے۔ محترمہ کویتا نے کہا کہ لوگ کہتے ہیں کہ اُردو دھیر ے دھیرے ختم ہورہی ہے لیکن ایسا نہیں ہے اُردو ایک میٹھی زبان ہے او ر اسکا مستقبل درخشاں ہے ۔ اُردو دکن میں پیدا ہوئی ‘ دہلی میں بچپن گذرا‘ اور لکھنو میں جوان ہوئی اُردو کا مادر وطن دکن ہے اور ساری دنیا میں بولی پڑھئی جاتی ہے ‘ ٹی آریس حکومت اُردو کو اسکا جائز مقام دلوانے اُردو زبان کی ترقی و ترویج کیلئے حکومت کی جانب سے موثر اقدامات کیے جارہے ہیں ۔ اُردو کی ترقی و ترویج کیلئے حکومت کی جانب سے بجٹ میں بھی اضافہ کیا جائیگا۔رکن اسمبلی جگتیال مسٹر ٹی جیون ریڈی نے بھی مخاطب کرتے ہوئے کہاکہ اُردو دلوں کو جوڑنے والی زبان میں ہے یہ کسی فرقہ یا کسی طبقہ کی زبان نہیں ہے اُردودنیا کے زبانوں میںایک واحدمیٹھی زبان ہے اس کی چاشنی کسی اور زبان میں نہیں ہے۔ انہوںنے کہاکہ اُردو والوں کو فخر کرنا چاہے ساری دنیا میں بولی جانیوالی زبان ہے اور ساری دنیا کے لوگ اسے پسند کرتے ہیں ۔انہوں نے اُردو کی ترقی کیلئے ہر ممکنہ تعاون کرنیکا تیقن دیا۔مشاعرہ کو ڈاکٹر سنجے کمار‘ عمر ستار اور دیگر نے بھی مخاطب کیا۔شعراء کرام مسز لتا حیا ممبئی ‘ عزم شاکری ‘ جلال میکش ‘ غالب آسی نانڈیڑ‘ فیصل سہواری‘ مزاحیہ شاعر ابراہیم ساگر‘ وحید پاشاہ قادری ‘ شیخ احمد ضیا ناندیڑ‘ انجم دہلوی‘ مہک کیرانوی‘ کے علاوہ مقامی شعراء کرام میں محمد عظیم الدین الدین راہیؔ ‘ مزاحیہ مترنم شاعر کریٹیکل جگتیالی‘ لیاقت علی محسنؔ نے بھی کلام سنایا ۔ مسز لتا حیا ء ممبئی نے اپنے کلام سے سامعین کو محظوظ کیا اور مشاعرہ لوٹ لیا۔مشاعرہ کی نظامت جمیل سحر مالیگاؤں نے چلائی۔ احمد عبدالملک کنونیر مشاعرہ نے منتظمین مشاعرہ محمد محمود علی افسرسید جمیل احمد‘ ‘ محمد صلاح الدین منا‘ میر کاظم علی اور دیگر سے اظہار تشکر کیا۔رکن پارلیمنٹ مسز کے کویتا اور رکن اسمبلی ٹی جیون ریڈی نے اُردو دوستی کا ثبوت دیتے ہوئے دیر رات مشاعرہ میں بیٹھے رہے اور رات دیر گئے مشاعرہ اختتام پذیر ہوا۔

TOPPOPULARRECENT