جرمنی میں ٹیچرس کے اسکارف پر امتناع کالعدم

برلن 13 مارچ ( سیاست ڈاٹ کام ) جرمنی کی اعلیٰ ترین عدالت نے ٹیچرس کے اسکارف پہننے کو غیر قانونی قرار دینے والے سرکاری امتناع کو کالعدم قرار دیدیا ہے اور کہا کہ حکومت کے احکام در اصل مذہبی آزادی کے مغائر ہیں۔ وفاقی دستوری عدالت نے آج دو خاتون مسلم ٹیچرس کے حق میں یہ رائے دی، جن کا تعلق شمالی رہینے ۔ ویسٹ فالیا ریاست سے تھا ۔ کہا گیا ہے کہ

برلن 13 مارچ ( سیاست ڈاٹ کام ) جرمنی کی اعلیٰ ترین عدالت نے ٹیچرس کے اسکارف پہننے کو غیر قانونی قرار دینے والے سرکاری امتناع کو کالعدم قرار دیدیا ہے اور کہا کہ حکومت کے احکام در اصل مذہبی آزادی کے مغائر ہیں۔ وفاقی دستوری عدالت نے آج دو خاتون مسلم ٹیچرس کے حق میں یہ رائے دی، جن کا تعلق شمالی رہینے ۔ ویسٹ فالیا ریاست سے تھا ۔ کہا گیا ہے کہ عدالت کے ان احکام پر دوسری ریاستوں میں بھی عمل آوری ہوگی ۔ متعلقہ ریاست کے نئے قانون میں اسکارف پہننے پر اس بنیاد پر امتناع عائد کیا گیا تھا کہ اس سے ٹیچرس کی غیر جانبداری پر سوال پیدا ہوتا ہے اور اس سے کلاس روم میں رکاوٹ پیدا ہوتی ہے ۔ عدالت نے تاہم یہ رولنگ دی کہ اسکول کو اسکارف پر امتناع عائد کرنے کیلئے صرف ایک وجہ بتانے کی بجائے کوئی مخصوص خطرہ کو ظاہر کرنا چاہئے ۔

TOPPOPULARRECENT