Monday , June 25 2018
Home / دنیا / جرمنی کو افغانستان مشن کی غلطی پر افسوس ، غلط اندازے قائم کرنے کا اعتراف

جرمنی کو افغانستان مشن کی غلطی پر افسوس ، غلط اندازے قائم کرنے کا اعتراف

برلن۔ /12 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) جرمنی نے افغانستان مشن کے سلسلے میں غلطی پر افسوس کا اظہار کیا ہے ۔ جرمنی کے وزیرخارجہ فرینک والٹر اسٹنمیر نے آج کہا کہ افغانستان میں 2001 ء سے فوجی مہم میں شمولیت ایک سنگین غلطی تھی ۔ انہوں نے جلد بازی میں دستبرداری کے خلاف بھی خبردار کیا ۔ ایک ایسے وقت جبکہ امریکی زیرقیادت نیٹو اتحادی فوجی کارروائی کا

برلن۔ /12 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) جرمنی نے افغانستان مشن کے سلسلے میں غلطی پر افسوس کا اظہار کیا ہے ۔ جرمنی کے وزیرخارجہ فرینک والٹر اسٹنمیر نے آج کہا کہ افغانستان میں 2001 ء سے فوجی مہم میں شمولیت ایک سنگین غلطی تھی ۔ انہوں نے جلد بازی میں دستبرداری کے خلاف بھی خبردار کیا ۔ ایک ایسے وقت جبکہ امریکی زیرقیادت نیٹو اتحادی فوجی کارروائی کا جاریہ سال افغانستان میں اختتام عمل میں آرہا ہے ، اسٹنمیر نے 13 سالہ مشن پر اپنا تجزیہ پیش کیا ۔ انہوں نے کہا کہ ہماری سب سے بڑی غلطی یہ تھی کہ ہم نے بہت زیادہ توقعات باندھ لی تھیں ۔ ہم نہ صرف یہ کہ افغانستان کی وجہ سے لاحق سکیورٹی خطرات کو ختم کرنا چاہتے تھے بلکہ ہم نے مستقبل کے تعلق سے بھی غلط اندازے قائم کرلئے تھے ۔ انہوں نے کہا کہ افغانستان میں کسی قدر پیشرفت کے باوجود یہاں نشیلی اشیاء کی تجارت اور کرپشن کی سطح اپنی حدوں کو چھورہی ہے ۔ کئی صوبوں میں جاگیرداروں کا راج ہے ۔ یہاں پرتشدد واقعات عام بات ہیں ۔ انہوںنے اس بات کی بھی نشاندہی کی کہ طالبان کے بارے میں طویل عرصہ سے صرف ایک سیاسی جماعت کی حیثیت سے غلط اندازے قائم کئے جارہے ہیں ۔ لیکن انہوں نے یہ بھی کہا کہ اتحادی فوج کی تعیناتی کو ناکامی کے تناظر میں نہیں دیاکھا جانا چاہئیے کیونکہ شام یا عراق کے مقابلے میں افغانستان کے نتائج کافی بہتر رہے ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT