Tuesday , January 23 2018
Home / سیاسیات / جسونت سنگھ کو بارمیر سے ٹکٹ دینے سے بی جے پی کا انکار

جسونت سنگھ کو بارمیر سے ٹکٹ دینے سے بی جے پی کا انکار

نئی دہلی 21 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی نے آج اپنے ایک سینئر لیڈر جسونت سنگھ کو راجستھان کے لوک سبھا حلقہ بارمیر سے ٹکٹ دینے سے انکار کرتے ہوئے بُری طرح نظرانداز کردیا اور ان کے بجائے کرنل سونا رام چودھری کو اس حلقہ سے اپنا امیدوار بنانے کا اعلان کیا جہاں سے جسونت سنگھ مقابلہ کرنا چاہتے تھے۔ ایل کے اڈوانی کے انتہائی قریبی رفیق سمجھ

نئی دہلی 21 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی نے آج اپنے ایک سینئر لیڈر جسونت سنگھ کو راجستھان کے لوک سبھا حلقہ بارمیر سے ٹکٹ دینے سے انکار کرتے ہوئے بُری طرح نظرانداز کردیا اور ان کے بجائے کرنل سونا رام چودھری کو اس حلقہ سے اپنا امیدوار بنانے کا اعلان کیا جہاں سے جسونت سنگھ مقابلہ کرنا چاہتے تھے۔ ایل کے اڈوانی کے انتہائی قریبی رفیق سمجھے جانے والے جسونت سنگھ کی ٹکٹ سے محرومی سے ایک دن قبل ہی اس پارٹی نے اپنے ایک بانی لیڈر (اڈوانی) کو ان کی مرضی کے خلاف گجرات کے حلقہ گاندھی نگر سے ہی مقابلہ کیلئے مجبور کردیا۔ مسٹر اڈوانی اگرچہ مدھیہ پردیش کے حلقہ بھوپال سے مقابلہ کے خواہاں تھے۔ یہ قیاس آرائیاں بھی کی جارہی ہیں کہ جسونت سنگھ بحیثیت آزاد امیدوار مقابلہ کریں تے تاہم اس اطلاع کی توثیق نہیں ہوئی ہے۔

سونا رام چودھری جو ایک بااثر جاٹ لیڈر ہیں، حال ہی میں کانگریس سے منحرف ہوکر بی جے پی میں شمولیت اختیار کی ہے۔ 76 سالہ جسونت سنگھ جو فی الحال مغربی بنگال کے حلقہ دارجلنگ کے رکن لوک سبھا ہیں، مجوزہ انتخابات میں بارمیر سے ٹکٹ مانگا تھا۔ اُن کا کہنا تھا کہ غٓلباً یہ ان کا آخری انتخابی مقابلہ ہوگا چنانچہ وہ آبائی ریاست سے مقابلہ کے خواہاں ہیں۔ این ڈی اے دور حکومت میں جسونت سنگھ اُمور خارجہ، فینانس اور دفاع کے وزیر رہے ہیں۔ جسونت سنگھ نے تاثرات سفر پاکستان پر اپنی کتاب میں اسلامی ملک کے بانی محمد علی جناح کی ستائش کے بعد بی جے پی میں مختلف مسائل کا سامنا کرچکے ہیں۔ سردار پٹیل کے خلاف چند ریمارکس کے سبب ان کی کتاب پر گجرات میں امتناع عائد ہے۔ اس کتاب پر تنازعہ پیدا ہونے کے بعد جسونت سنگھ کو بی جے پی سے خارج بھی کیا گیا تھا۔ وہ 2004 ء سے 2009 ء تک راجیہ سبھا میں اپوزیشن لیڈر تھے۔ 2012 ء میں نائب صدرجمہوریہ کے عہدہ کے لئے اُنھوں نے این ڈی اے امیدوار کی حیثیت سے مقابلہ کیا تھا۔

بی جے پی نے بارمیر سے سونا رام چودھری کے علاوہ حلقہ لوک سبھا اجمیر سے کانگریس کے سچن پائلٹ سے مقابلہ کیلئے سانور مل جاٹ ، کراؤلتی دھول پور (پسماندہ طبقات) سے منوج راجوریا اور پالی سے پی پی چودھری کو ٹکٹ دیا ہے۔ بی جے پی میں ٹکٹوں کی تقسیم کے سوال پر زبردست ناراضگی دیکھی جارہی ہے جہاں اکثر سینئر قائدین کو نظرانداز کیا گیا ہے یا اُن کی خواہش کے برخلاف دیگر حلقوں سے امیدوار نامزد کیا گیا ہے ،جس پر اِس جماعت کے کارکنوں نے ناراضگی ظاہر کی ہے اور قائدین نے اندیشہ ظاہر کیا ہے کہ ایسے واقعات سے قائدین کا جوش و خروش متاثر ہوسکتا ہے۔

TOPPOPULARRECENT