Sunday , May 27 2018
Home / Top Stories / جسکا دوست ٹرمپ جیسا ہو اُسے دشمن کی کیا ضرورت : ڈونالڈٹسک

جسکا دوست ٹرمپ جیسا ہو اُسے دشمن کی کیا ضرورت : ڈونالڈٹسک

امریکہ کے ایران نیوکلیئر معاہدہ سے نکلنے کے بعد یوروپی یونین کا یونائیٹیڈ یوروپین
فرنٹ قائم کرنے کا مشورہ
چلواچھا ہوا، ٹرمپ نے اپنی اصلیت ظاہر کردی، بھروسہ صرف اپنے ہاتھ پر ہونا
چاہئے، صدر یوروپی یونین کی اخباری نمائندوں سے بات چیت

صوفیہ ۔ 17 مئی (سیاست ڈاٹ کام) یوروپی یونین کے ایک اعلیٰ سطحی عہدیدار نے امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے عجیب و غریب رویہ کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ موصوف ایک دوست کی بجائے کسی دشمن کی طرح نظر آتے ہیں۔ یوروپی یونین کے صدر ڈونالڈ ٹسک (جو اپنے پہلے نام سے ٹرمپ کے ہم نام ہیں) نے بلغاریہ میں ملاقات کررہے عالمی قائدین سے خواہش کی کہ وہ ’’یونائیٹیڈ یوروپین فرنٹ‘‘ قائم کریں۔ یہ بات انہوں نے ٹرمپ کے ایران نیوکلیئر معاہدہ سے علحدگی اختیار کرنے اور یوروپ پر اپنے تجارتی نرخ نافذ کرنے کے تناظر میں کہی۔ ڈونالڈ ٹسک نے امریکی انتظامیہ کو یوروپ کے روایتی دشمنوں روس اور چین کی طرح قرار دیا۔ یاد رہیکہ اس وقت بلغاریہ کے شہر صوفیہ میں دنیا کے 28 سربراہان مملکت ایک کانفرنس میں شرکت کررہے ہیں جہاں انہوں نے امریکہ کے ایران نیوکلیئر معاہدہ سے دستبردار ہونے کے موضوع پر تبادلہ خیال کیا۔ بعدازاں اخباری نمائندوں سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا اگر کسی کا دوست ڈونالڈ ٹرمپ جیسا ہو تو پھر اسے دشمنوں کی ضرورت کیا ہے۔ شاید ایسی ہی کسی صورتحال کیلئے ہندوستان کے مشہور و معروف شاعر غالب نے یہ شعر کہا ہوگا۔
یہی ہے آزمانا تو ستانا کس کو کہتے ہیں
ہوئے تم دوست جس کے دشمن اس کا آسماں کیوں ہو
انہوں نے کہا کہ اگر صدر ٹرمپ کے حالیہ فیصلوں کی جانب نظر دوڑائی جائے تو بہ الفاظ دیگر ہمیں ان کا شکرگزار ہونا چاہئے کہ ہم اس فریب اور دھوکے سے باہر نکل آئے کیونکہ ٹرمپ کے رویہ اور فیصلوں نے ہمیں یہ سکھایا ہے کہ اگر ہمیں کسی مددگار ہاتھ کی ضرورت ہے تو وہ ہاتھ ’’خود آپ کا‘‘ ہی ہونا چاہئے۔ یوروپی یونین قائدین اپنے بلقان ہم منصبوں کے ساتھ ایک اعلیٰ سطحی اجلاس میں شرکت کررہے ہیں تاکہ تعلقات کو مزید مستحکم کرتے ہوئے روس کو اس منظرنامہ سے دور رکھا جائے۔ یہاں اس بات کا تذکرہ بھی ضروری ہیکہ یوروپی وزراء نے بروسلز میں منگل کے روز ایران کے ایک اعلیٰ سطحی عہدیدار سے ملاقات کی تھی تاکہ اس معاہدہ سے باہر آنے کے بعد اس معاہدہ کا تحفظ کیا جاسکے۔ دریں اثناء یوروپی یونین امریکہ کی جانب سے اسٹیل اور المونیم پر عائد کردہ زائد ٹیکس کے اطلاق سے استثنیٰ حاصل کرنے کوشاں ہے۔ ڈونالڈ ٹسک اب یہ چاہتے ہیں کہ منقسم یوروپی یونین میں اتحاد کو مزید مستحکم کیا جائے کیونکہ آئندہ سال برطانیہ بھی یوروپی یونین کا رکن نہیں رہے گا اور اس طرح چیلنجز میں مزید اضافہ ہوگا۔

TOPPOPULARRECENT