Thursday , December 14 2017
Home / جرائم و حادثات / جعلی دستاویزات کے ذریعہ اراضی کی فروخت 7 گرفتار

جعلی دستاویزات کے ذریعہ اراضی کی فروخت 7 گرفتار

ایس آر نگر پولیس کو اصل سرغنہ سکندر نواب اور صدیقی کی تلاش
حیدرآباد ۔ 14 ۔ اکٹوبر : ( سیاست نیوز ) : فرضی شناخت اور جعلی دستاویزات کے ذریعہ اراضی فروخت کرنے والی ایک ٹولی کو ایس آر نگر پولیس نے گرفتار کرلیا ۔ پولیس نے بتایا کہ جوائنٹ سب رجسٹرار کی شکایت پر کارروائی کرتے ہوئے پولیس نے 7 افراد کو گرفتار کرلیا ۔ جب کہ اصل سرغنہ مفرور بتائے گئے ہیں ۔ انسپکٹر ایس آر نگر وحید الدین نے بتایا کہ پولیس سکندر نواب اور صدیقی کو شدت سے تلاش کررہی ہے اور ان کے متعلق تمام تفصیلات اکٹھا کی جارہی ہیں ۔ انسپکٹر وحید الدین نے بتایا کہ گذشتہ دنوں جوائنٹ سب رجسٹرار مسٹر سرینواس نے ایس آر نگر پولیس میں شکایت درج کروائی تھی کہ چند افراد نے رادھا کرشنا جو فوت ہوچکا تھا ۔ ان کی ایک ہزار یارڈ اراضی کو فروخت کردیا تھا ۔ متوفی شخص کی بیوی راجیہ لکشمی اور ان کے افراد خاندان اس اراضی کو فروخت کرنے کی غرض سے سب رجسٹرار آفس رجوع ہوئے تو انہیں اس بات کا انکشاف ہوا ۔ خود سب رجسٹرار نے انہیں بتایا کہ رادھا کرشنا نے اس اراضی کو بھانو تیجا نامی شخص کو فروخت کردیا ہے ۔ تمام دستاویزات کی جانچ کے بعد اور رادھا کرشنا کا ڈیتھ سرٹیفیٹ جانچنے کے بعد سب رجسٹرار کو یقین ہوگیا کہ دھوکہ دہی ہوئی ہے ۔ جس کے بعد اس نے ایس آر نگر میں شکایت کردی ۔ پولیس نے ایف آئی آر کے بعد تحقیقات کے دوران پتہ چلایا کہ امتیاز احمد قریشی نامی شخص کو رادھا کرشنا کے طور پر پیش کرتے ہوئے اراضی کو فروخت کردیا گیا ۔ انسپکٹر وحید الدین نے بتایا کہ اس معاملہ میں کل 14 تا 15 افراد کی ٹولی ملوث ہے ۔ تاہم سکندر نواب اور صدیقی اصل سرغنہ ہیں ۔ پولیس نے ندیم ، منیر ، ستیم ریڈی ، وینو مادھو و دیگر کو گرفتار کرلیا اور مصروف تحقیقات ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT