Saturday , August 18 2018
Home / دنیا / جعلی ڈگری کا پتہ چلانے سعودیہ کی خصوصی مساعی

جعلی ڈگری کا پتہ چلانے سعودیہ کی خصوصی مساعی

ریاض ۔ 19 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) دھوکہ دہی کے تدارک کی سنجیدہ کوششوں کے طور پر نئی دہلی میں سعودی عرب کی ایمبیسی نے سلطنت میں ملازمت کے خواہشمند ہندوستانیوں کی قابلیت کی جانچ پڑتال کیلئے ایک پروفیشنل فرم کی خدمات حاصل کرنے کا منصوبہ بنایا ہے۔ سعودی سفارتی ذرائع کے مطابق حال میں ایمبیسی نے اس منصوبہ پر کام شروع کیا کیونکہ کئی ہندوستان

ریاض ۔ 19 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) دھوکہ دہی کے تدارک کی سنجیدہ کوششوں کے طور پر نئی دہلی میں سعودی عرب کی ایمبیسی نے سلطنت میں ملازمت کے خواہشمند ہندوستانیوں کی قابلیت کی جانچ پڑتال کیلئے ایک پروفیشنل فرم کی خدمات حاصل کرنے کا منصوبہ بنایا ہے۔ سعودی سفارتی ذرائع کے مطابق حال میں ایمبیسی نے اس منصوبہ پر کام شروع کیا کیونکہ کئی ہندوستانی یونیورسٹیوں نے ورکرس کی قابلیتوں کے تعلق سے معلومات حاصل کرنے کی کوششوں پر مناسب ردعمل ظاہر نہیں کیا۔ اس کمپنی کا رول اس ضمن میں طریقہ کار کو سہل اور تیز تر بنانا رہے گا۔ یہ اقدام اس پس منظر میں ہورہا ہے کہ سلطنت میں آجرین کو تارک وطن ورکرس کی جانب سے پیش کئے جانے والے جعلی تعلیمی اسناد کی تعداد بڑھتی جارہی ہے۔ سعودی کونسل آف انجینئرس کے چیرمین حماد الشیخاوی نے قبل ازیں تصدیق کی کہ ان کی آرگنائزیشن نے اپنے شعبہ میں لگ بھگ 1700 جعلی اسناد کا پتہ چلایا ہے۔ اس کونسل نے سعودیوں اور تارکین وطن کے انجینئرنگ سرٹیفکیٹس کی جانچ پڑتال کا کام 2010ء میں شروع کیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ گذشتہ 3 ماہ میں 157 جعلی سرٹیفکیٹس کا پتہ چلا ہے۔

TOPPOPULARRECENT