Thursday , December 14 2017
Home / شہر کی خبریں / جلسہ کی اجازت میں تاخیر وزیر داخلہ نرسمہا ریڈی کا رویہ قابل مذمت : کودانڈا رام

جلسہ کی اجازت میں تاخیر وزیر داخلہ نرسمہا ریڈی کا رویہ قابل مذمت : کودانڈا رام

حیدرآباد 28 نومبر ( این ایس ایس ) تلنگانہ جے اے سی کے صدر نشین پروفیسر ایم کودانڈا رام نے کہا کہ وزیر داخلہ این نرسمہا ریڈی عوام کو ‘ چاہے وہ کوئی بھی ہوں ‘ جلسے منعقد کرنے کی اجازت نہیں دے رہے ہیں اور انہیں ماؤیسٹ قرار دیا جا رہا ہے ۔ ان کا یہ رویہ قابل مذمت ہے ۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ پولیس 31 اکٹوبر کو منعقد کئے جانے والے ’’ کولوولا کوٹلالا ‘‘ جلسہ کی اجازت دینے میں تاخیر کی حکمت عملی اختیار کر رہی ہے ۔ انہوں نے کہا ہک پولیس اس اجلاس کیلئے اجازت نہیں دے رہی ہے حالانکہ درخواست داخل کردی گئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پولیس اس بات کی کوشش کر رہی ہے کہ یہ جلسہ منعقد نہ ہونے پائے ۔ انہوں نے انکشاف کیا کہ عدالت نے نلگنڈہ یاترا اجلاس منعقد کرنے کی اجازت دیدی ہے ۔ میڈیا سے بات کرتے ہوئے کودانڈا رام نے ادعا کیا کہ پولیس کی جانب سے فنکشن ہالس اور گراونڈز کے انتظامیہ کو دھمکایا جا رہا ہے کہ وہ اپنے ہالس یا گراونڈز جے اے سی اجلاس کیلئے فراہم نہ کریں۔ انہوں نے کہا کہ ایسی صورتحال تو متحدہ آندھرا پردیش میں بھی پیش نہیں آئی تھی ۔ انہوں نے حیرت ظاہر کی کہ آیا وزیر داخلہ ریاست میں نہیں ہیں ؟۔ جے اے سی صدر نشین نے یہ واضح کردیا کہ ’’ کولوولا کوٹلالا ‘‘ جلسہ 31 اکٹوبر کو منعقد ہوگا ۔ انہوں نے بیروزگار نوجوانوں سے اپیل کی کہ وہ اس جلسہ میں بھاری تعداد میں شرکت کریں۔ اس اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے کہ عدالت سے اس اجلاس کے انعقاد کی اجازت مل جائیگی کودانڈا رام نے کہا کہ عدالت سے خواہش کی جا رہی ہے کہ حیدرآباد میں یہ جلسہ این ٹی آر اسٹیڈیم میں یا ایل بی اسٹیڈیم میں یا پھر سرور نگر اسپورٹس کامپلکس میں منعقد کرنے کی اجازت دی جائے ۔

TOPPOPULARRECENT