Sunday , December 17 2017
Home / عرب دنیا / جمرات پلوں کو قابل تجدید توانائی سے ٹھنڈا رکھنے کی تجویز

جمرات پلوں کو قابل تجدید توانائی سے ٹھنڈا رکھنے کی تجویز

ریاض ۔ 26 مئی (سیاست ڈاٹ کام) سعودی عرب کے ماہرین نے تجویز پیش کی ہے کہ رمی جمرات(شیطان کو کنکریاں مارنے) کے لیے بنائے گئے راستوں اور پلوں متبادل اور قابل تجدید توانائی کے ذریعے ٹھنڈا رکھا جا سکتا ہے۔ اس مقصد کے لیے حکومت کو توانائی کے حصول کے لیے کوئی نیا پروجیکٹ لگانے کی ضرورت نہیں بلکہ جمرات پلوں پر حجاج کرام کے چلنے ، شمسی توانائی اور ہوا سے بجلی پیدا کی جاسکتی ہے جو نہ صرف جمرات پلوں پر موسم گرما میں ٹھنڈک کا احساس پیدا کرنے میں مدد دے گی بلکہ بجلی کی دیگر ضروریات کو بھی پوری کرسکے گی۔ جمرات پلوں کو حجاج کرام کے چلنے سے بجلی پیدا کرکے ٹھنڈا کرنے کی تجویز خادم الحرمین الشریفین ریسرچ انسٹیٹیوٹ برائے حج عمرہ کے 16 اجلاس کے دوران پیش کی گئی۔ تفصیلی تجویز میں کہا گیا ہے کہ پیدل چلنے سے بجلی پیدا کرنے کا منصوبہ رمی جمرات کی شکل میں متبادل توانائی کے حصول کے لیے اپنایا جاسکتا ہے۔ جمرات پلوں سے حجاج کرام کے چلنے سے حاصل ہونے والی بجلی سے نہ صرف مقام جمرات کو ائیر کینڈیشنڈ رکھا جاسکتا ہے بلکہ توانائی پر چلنے والی گاڑیوں کی بٹیریاں بھی وہاں پر چارج کی جاسکتی ہیں۔ اس مقصد کے لیے اضافی طورپر بجلی کے حصول کی ضرورت نہیں ہوگی۔ سعودی اخبار ’’الاقتصادیہ‘‘ نے اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ رمی جمرات سے تین طرح کی بجلی پیدا کی جاسکتی ہے۔ پہلا طریقہ شمی توانائی کے ذریعے بجلی پیدا کرنے کا ہے۔ تمام جمرات پلوں پر شمسی توانائی پیدا کرنے والی پلیٹیں نصب کی جائیں۔ پوری دنیا میں ایک دن میں ایک مربع میٹر کی جگہ سے 7.4 کلو واٹ بجلی پیدا کی جاسکتی ہے۔ جمرات اس حوالے سے اہم ہیں کیونکہ یہاں سورج کی شعائیں براہ راست پڑتی ہیں۔ جمرات سے بجلی کی تیاری کا دوسرا طریقہ ہوا کے ذریعے بجلی کی تیاری ہے۔ چونکہ مکہ مکرمہ کے بیشتر مقامات پر ہوا کی معمول کی رفتار 7.4 اور 8.2 کلو میٹر فی گھنٹہ ہوتی ہے جو بجلی پیدا کرنے والی ٹربائنوں کو چلانے کے لیے کافی ہے۔ بجلی کی تیاری کا تیسرا آسان طریقہ مکینیکل توانائی کا حصول ہے یعنی لوگوں کے پیدل چلنے سے بجلی پیدا کی جاسکتی ہے۔ رمی جمرات میں بڑی تعداد میں حجاج کرام پیدل چلتے ہیں۔ اس لیے وہاں پر بجلی کے حصول کا یہ ذریعہ بھی کار گر ہوسکتا ہے۔ جمرات کے مقام سے بجلی کے متبادل طریقوں سے توانائی کے حصول کی تجاویز جاریہ ماہ 17 اور 18 مئی کو ہوئے اجلاس کے موقع پر پیش کی گئیں۔ ان تجاویز کو متعلقہ شعبوں کو بھجوا دیا گیا ہے جو انہیں عملی شکل میں لانے کے لیے مختلف پہلوؤں پر غور کررہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT