Wednesday , September 19 2018
Home / Top Stories / جموں و کشمیرمیں معلق اسمبلی ، جھارکھنڈ میں بی جے پی کو اکثریت

جموں و کشمیرمیں معلق اسمبلی ، جھارکھنڈ میں بی جے پی کو اکثریت

نئی دہلی ۔ 20 ۔ دسمبر : ( سیاست ڈاٹ کام ) : جموں و کشمیر میں پیپلز ڈیموکرٹیک پارٹی ( پی ڈی پی ) کو کامیابی مل رہی ہے ۔ اگزٹ پول کے مطابق پارٹی کو 36-41 نشستیں مل رہی ہیں جب کہ 87 رکنی جموں و کشمیر اسمبلی میں بی جے پی کو 16-22 نشستیں ملیں گی ۔ اس نے بھاری توقعات کے ساتھ انتخاب لڑاتھا ۔ حکمراں نیشنل کانفرنس اور اس کی حلیف کانگریس کو فی پارٹی صرف 9-13 نش

نئی دہلی ۔ 20 ۔ دسمبر : ( سیاست ڈاٹ کام ) : جموں و کشمیر میں پیپلز ڈیموکرٹیک پارٹی ( پی ڈی پی ) کو کامیابی مل رہی ہے ۔ اگزٹ پول کے مطابق پارٹی کو 36-41 نشستیں مل رہی ہیں جب کہ 87 رکنی جموں و کشمیر اسمبلی میں بی جے پی کو 16-22 نشستیں ملیں گی ۔ اس نے بھاری توقعات کے ساتھ انتخاب لڑاتھا ۔ حکمراں نیشنل کانفرنس اور اس کی حلیف کانگریس کو فی پارٹی صرف 9-13 نشستیں حاصل ہوں گی ۔ جھارکھنڈ میں بی جے پی کو اکثریت حاصل ہورہی ہے ۔ وادی کشمیر میں بی جے پی کا صفایا بتایا جارہا ہے ۔ البتہ ایک اور اگزٹ پول میں جموں و کشمیر میں معلق اسمبلی کی پیش قیاسی کی گئی ہے دو علحدہ اگزٹ پول میں دونوں ریاستوں سے اسمبلی انتخابات میں مختلف پیش قیاسی کی گئی ہے ۔ دونوں ریاستوں میں آج رائے دہی کا عمل ختم ہونے کے بعد انڈیا ٹی وی ۔ سی ووٹر نے اگزٹ پول میں بتایا کہ جھارکھنڈ اسمبلی 81 رکنی ایوان میں بی جے پی اور اس کی حلیف پارٹی اے جے ایس یو کو 37-45 نشستیں ملیں گی جب کہ ٹوڈے چانکیہ نے زعفرانی پارٹی کی بھاری اکثریت سے کامیابی کی پیش قیاسی کی ہے اور بی جے پی کو 61 نشستیں ملنے کا اشارہ دیا ہے ۔ جموں و کشمیر میں 87 رکنی ایوان میں بی جے پی کو 44 نشستیں حاصل کرنے میں کامیابی ہورہی ہے ۔

مفتی محمد سعید زیر قیادت پی ڈی پی کو زبردست کامیابی ملے گی جب کہ نیشنل کانفرنس کو بدترین شکست کا سامنا ہوگا۔ پی ڈی پی کو قابل قدر نشستیں ملیں گی ۔ پی جے پی نے کشمیر میں جارحانہ مہم چلائی تھی ۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے کئی جلسوں سے خطاب کیا تھا لیکن وہ وادی میں رائے دہندوں کو راغب کرنے میں ناکام ہوئے ہیں ۔ لداخ میں بی جے پی اور کانگریس کو فی کس 1-3 نشستیں ملیں گی سابق جموں و کشمیر اسمبلی میں 2008 انتخابات میں نیشنل کانفرنس نے 28، پی ڈی پی نے 21 ، کانگریس نے 17 اور بی جے پی نے 11 پر کامیابی حاصل کی تھی ۔ جھارکھنڈ میں حکمران پارٹی جے ایم ایم کو 15-23 نشستیں مل رہی ہیں ۔ کانگریس کو صرف 3-7 نشستیں ملیں گے ۔ آج جھارکھنڈ اور جموں و کشمیر میں اختتام ہوئی رائے دہی میں ریکارڈ پولنگ ہوئی ہے ۔ جموں و کشمیر میں گذشتہ 27 سال کے دوران اس مرتبہ تاریخی اور غیر معمولی رائے دہی ریکارڈ کی گئی ہے ۔

پانچ مرحلوں میں 66 فیصد رائے دہندوں نے اپنے حق ووٹ سے استفادہ کیا ۔ آج ہوئی رائے دہی میں 76 فیصد ووٹ ڈالے گئے ۔ جھارکھنڈ نے میں مجموعی طور پر 66 فیصد کا ریکارڈ تناسب 81 اسمبلی نشستوں کیلئے درج ہوا ہے جو پانچ مراحل میں لگ بھگ چار ہفتوں کے وقفے میں منعقد کئے گئے، جس کا آج آخری مرحلے میں 16 سیٹوں کیلئے پولنگ کے ساتھ اختتام عمل میں آیا جہاں لگ بھگ 70.42 فیصد رائے دہی نوٹ کی گئی ہے۔ ووٹوں کی گنتی 23 ڈسمبر کو مقرر ہے۔ چیف الکٹورل آفیسر پی کے جاجوریا نے پریس کانفرنس میں کہا کہ پانچ مرحلے کے انتخابات میں مجموعی طور پر 66 فیصد پولنگ درج رجسٹر ہوئی، جو گزشتہ 2009ء کے انتخابات سے 9 فیصد کا اضافہ ہے۔ پانچ مرحلے کے الیکشن میں 66 فیصد پولنگ جھارکھنڈ میں ریکارڈ ہے جبکہ اس ریاست کے کسی بھی الیکشن میں چاہے اسمبلی ہو یا لوک سبھا ، تشکیل ریاست سے قبل اس قدر اونچی پولنگ درج نہیں ہوئی تھی ۔ پانچویں و آخری مرحلے کی رائے دہی 16 نشستوں کیلئے آج پُرامن طور پر اختتام پذیر ہوئی جس میں کوئی ناخوشگوار واقعات کی اطلاع نہیں ملی اور 70.42 کی زبردست ووٹنگ ریکارڈ ہوئی ہے۔

TOPPOPULARRECENT