Sunday , June 24 2018
Home / سیاسیات / جموں و کشمیر حکومت کی عنقریب تشکیل ممکن

جموں و کشمیر حکومت کی عنقریب تشکیل ممکن

سرینگر ؍ نئی دہلی ۔ 20 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) جموں و کشمیر میں بی جے پی ۔ پی ڈی پی مخلوط حکومت کی تشکیل کا عنقریب اعلان ممکن ہے جس کے ساتھ ’’کافی احتیاط سے‘‘ تیار کردہ مشترک اقل ترین پروگرام بھی رہے گا جو تمام متنازعہ مسائل جیسے آرٹیکل 370 اور اے ایف ایس پی اے کے بارے میں موقف پیش کرے گا۔ ذرائع نے کہا کہ یہ اعلان اس ہفتہ کے اختتامی مرحلہ

سرینگر ؍ نئی دہلی ۔ 20 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) جموں و کشمیر میں بی جے پی ۔ پی ڈی پی مخلوط حکومت کی تشکیل کا عنقریب اعلان ممکن ہے جس کے ساتھ ’’کافی احتیاط سے‘‘ تیار کردہ مشترک اقل ترین پروگرام بھی رہے گا جو تمام متنازعہ مسائل جیسے آرٹیکل 370 اور اے ایف ایس پی اے کے بارے میں موقف پیش کرے گا۔ ذرائع نے کہا کہ یہ اعلان اس ہفتہ کے اختتامی مرحلہ میں یا آئندہ ہفتہ کے وائل متوقع ہے بشرطیکہ آر ایس ایس مزید کوئی مشکلات بی جے پی کیلئے پیدا نہ کرے۔ پی ڈی پی سرپرست مفتی محمد سعید جو تمام 6 سالہ میعاد کیلئے چیف منسٹر بننے کی توقع ہے، یہی کہتے آئے ہیں کہ ان کی پارٹی اس ریاست سے متعلق مسائل پر ’’کوئی مفاہمت‘‘ نہیں کرنے والی ہے۔ اس بیان پر سابق ریاستی چیف منسٹر اور کارگذار صدر نیشنل کانفرنس عمرعبداللہ کی طرف سے تنقیدی ردعمل سامنے آیا ہے۔ پی ڈی پی87 رکنی اسمبلی میں 28 ایم ایل ایز رکھتی ہے اور بی جے پی کے 25 لیجسلیٹرس ہیں جو 23 ڈسمبر کو چناؤ کے شکستہ نتیجہ کے بعد سے گذشتہ7 ہفتوں سے مذاکرات کررہے ہیں۔ یہ ریاست موجودہ طور پر گورنر راج کے تحت ہے۔ ان تمام تبدیلیوں سے باخبر ذرائع کے مطابق دونوں فریقوں نے ممکن ہے ایسی کمیٹی تشکیل دینے سے اتفاق کرلیا ہے جو قانون خصوصی اختیارات برائے مسلح افواج کا جائزہ لے گی اور ایسے علاقوں کی نشاندہی کرے گی جہاں اس کی تنسیخ کی جاسکتی ہے۔ آرٹیکل 370 کے بارے میں اگرچہ بی جے پی نے پی ڈی پی کے تقاضہ کے مطابق کوئی تحریری تیقن نہیں دیا ہے لیکن سی ایم پی میں توقع ہیکہ دستور کے اندرون ریاست کے عوام کی امنگوں کا احترام کیا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT