Saturday , November 18 2017
Home / ہندوستان / جموں و کشمیر میں بیف کی فروخت پر پابندی ہائیکورٹ کے فیصلہ پر جماعت اسلامی کا اعتراض

جموں و کشمیر میں بیف کی فروخت پر پابندی ہائیکورٹ کے فیصلہ پر جماعت اسلامی کا اعتراض

سرینگر۔ 10 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) جموں و کشمیر ہائیکورٹ نے پولیس کو یہ ہدایت دی ہیکہ ریاست کے کسی بھی مقام پر بیف کی فروخت کے خلاف سخت کارروائی کی جائے۔ جماعت اسلامی نے شدید اعتراض کرتے ہوئے کہا کہ عدالت کا یہ حکم اسلامی عقائد کے خلاف ہے اور پارٹی اسے قبول نہیں کرے گی۔ ہائیکورٹ کی ڈیویژن بنچ نے منگل کے دن ذبیحہ گاؤ کے خلاف مفاد عامہ کی ایک درخواست پر سماعت کے بعد پولیس کو یہ ہدایت دی ہیکہ ریاست بھر میں بیف پر پابندی عائد کردی جائے اور اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ کہیں بھی بڑے گوشت کی فروخت ہونے نہ پائے۔ جماعت اسلامی کی نومنتخبہ امیر غلام محمد بھٹ نے کہا کہ ہم اس حکم کو تسلیم نہیں کریں گے جو نہ صرف سیکولر اقدار بلکہ ہمارے عقائد کے خلاف ہے اور اس پابندی کے خلاف ہر ممکنہ کوشش کریں گے کیونکہ یہ ہمارے مذہبی امور میں کھلی مداخلت ہے۔ انہوں نے بتایا کہ بیف مسلمانوں کیلئے حلال جانور ہے اور ہم اس کا استعمال کرتے رہیں گے۔ دریں اثناء علحدگی پسند لیڈر مسرت عالم کی زیرقیادت مسلم لیگ نے بھی ہائیکورٹ کے حکم کی مذزت کی ہے اور کہا کہ ہم اپنے مذہبی اعتقاد پر کوئی سمجھوتہ نہیں کرسکتے اور بیف کھانے کی ہمیں اجازت ہے۔

TOPPOPULARRECENT