جموں و کشمیر میں تشکیل حکومت کی کوشش

نئی دہلی ۔ 18 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) صدر پی ڈی پی محبوبہ مفتی نے آج وزیرفینانس ارون جیٹلی سے ملاقات کی۔ وہ گذشتہ ایک ہفتہ سے قومی دارالحکومت میں مقیم ہیں اور جموں و کشمیر میں تشکیل حکومت کیلئے بی جے پی کے ساتھ مشترکہ اقل ترین پروگرام پر اختلافات کو ختم کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ آج کی اس ملاقات سے میڈیا کو دور رکھا گیا۔ واضح رہیکہ بی جے

نئی دہلی ۔ 18 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) صدر پی ڈی پی محبوبہ مفتی نے آج وزیرفینانس ارون جیٹلی سے ملاقات کی۔ وہ گذشتہ ایک ہفتہ سے قومی دارالحکومت میں مقیم ہیں اور جموں و کشمیر میں تشکیل حکومت کیلئے بی جے پی کے ساتھ مشترکہ اقل ترین پروگرام پر اختلافات کو ختم کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ آج کی اس ملاقات سے میڈیا کو دور رکھا گیا۔ واضح رہیکہ بی جے پی نے ارون جیٹلی اور پارٹی کے سینئر لیڈر ارون سنگھ کو یہ اختیار دیا ہیکہ وہ ریاست میں تشکیل حکومت کیلئے علاقائی جماعتوں نیشنل کانفرنس اور پی ڈی پی سے بات چیت کریں۔ ریاست میں 23 ڈسمبر کو ہوئے انتخابات میں عوام نے معلق فیصلہ سنایا۔ پی ڈی پی 23 ارکان کے ساتھ سب سے بڑی جماعت رہی اور اسے 87 رکنی اسمبلی میں اکثریت کیلئے مزید 16 ارکان کی تائید درکار ہے۔ بی جے پی نے 25 نشستوں پر کامیابی حاصل کی جبکہ نیشنل کانفرنس کو 15 اور کانگریس کو 12 نشستوں پر کامیابی ملی۔

آج کی یہ ملاقات آر ایس ایس کی جانب سے یہ سوالات اٹھائے جانے کے پس منظر میں ہوئی کہ بی جے پی نے دفعہ 370 کے تعلق سے پی ڈی پی کے موقف کو تسلیم کرلیا ہے۔ فوری طور پر یہ نہیں معلوم ہوسکا کہ ارون جیٹلی اور محبوبہ مفتی کے مابین کیا بات چیت ہوئی، کیونکہ دونوں قائدین نے خاموشی اختیار کرلی ہے۔ دفعہ 370 اور مسلح فوج کو خصوصی اختیارات قانون کے سلسلہ میں بی جے پی کے موقف میں نرمی کے تعلق سے آر ایس ایس نے ناراضگی کا اظہار کیا ہے۔ پی ڈی پی ترجمان نعیم اختر نے کہا کہ ارون جیٹلی اور محبوبہ مفتی کے مابین بات چیت کی تفصیلات کا انہیں علم نہیں ہے۔ بتایا جاتا ہیکہ اہم موضوعات پر بی جے پی کو موقف تبدیل نہ کرنے کیلئے ریاستی بی جے پی کا بھی دباؤ ہے۔ حال ہی میں دہلی اسمبلی انتخابات میں بی جے پی کو شکست کے بعدپارٹی مرکزی قیادت اب ریاستی قائدین کی رائے کو اہمیت دے رہی ہے۔

TOPPOPULARRECENT