Saturday , May 26 2018
Home / شہر کی خبریں / جمہوریت میں دریافت کا حق، تشدد کی اجازت نہیں

جمہوریت میں دریافت کا حق، تشدد کی اجازت نہیں

ایوان میں حملہ کرنا صحتمند روایت نہیں، سوامی گوڑ

حیدرآباد۔ 12مارچ (سیاست نیوز) صدرنشین قانون ساز کونسل سوامی گوڑ نے کہا کہ گورنر کے خطبے کے دوران کانگریس ارکان کی جانب سے کاغذات اور ہیڈ فونس کے ذریعہ احتجاج کیا گیا اور ہیڈفون سے ان کی آنکھ زخمی ہوچکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ سابق میں اس طرح کا کوئی واقعہ پیش نہیں آیا۔ جمہوریت میں ہر کسی کو پوچھنے کا حق حاصل ہے لیکن پرتشدد احتجاج کی اجازت نہیں دی جاسکتی۔ انہوں نے کہا کہ حملہ کرنا بہتر اور صحتمند روایت نہیں ہے۔ اس سے ایوان کا وقار مجروح ہوگا۔ اسی دوران وزیر داخلہ این نرسمہا ریڈی نے میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ اس واقعہ کے لیے جو بھی ذمہ دار پائے جائیں گے ان کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس ارکان کا رویہ غیر جمہوری ہے اور ایوان میں غنڈا گردی کو برداشت نہیں کیا جائے گا۔ نرسمہا ریڈی نے کہا کہ اسپیکر مدھوسدھن چاری اس سلسلہ میں ایوان کے قواعد کے مطابق فیصلہ کریں گے۔ ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی نے بھی کانگریس ارکان کے رویہ کی مذمت کی۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس پارٹی بوکھلاہٹ کا شکار ہوچکی ہے اور حکومت پر تنقید کے لیے اس کے پاس کوئی مسئلہ نہیں رہا۔
کے سی آر حکومت نے ہر شعبہ میں مسائل کی یکسوئی کردی ہے۔ لہٰذا کانگریس ہنگامہ آرائی کے ذریعہ عوامی توجہ حاصل کرنا چاہتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس طرح کے رویہ پر عوام آئندہ انتخابات میں سبق سکھائیں گے۔

TOPPOPULARRECENT