Wednesday , January 17 2018
Home / ہندوستان / جمہوریت کی حفاظت کیلئے عسکریت پسندوں کا مقابلہ کیا جائیگا: فوجی سربراہ

جمہوریت کی حفاظت کیلئے عسکریت پسندوں کا مقابلہ کیا جائیگا: فوجی سربراہ

سرینگر 6 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) چیف آف آرمی اسٹاف جنرل دلبیر سنگھ سوہاگ نے آج کہا ہے کہ شمالی کشمیر کے ضلع بارہمولہ میں پوری کیمپ پر حملہ دراصل ریاست میں جمہوری عمل کو درہم برہم کرنے عسکریت پسندوں کی جان توڑ کوشش ہے۔ انھوں نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہاکہ بظاہر یہ حملہ، انتخابات کے تیسرے مرحلہ کو متاثر کرنے کی ایک ناکام کوشش تھی

سرینگر 6 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) چیف آف آرمی اسٹاف جنرل دلبیر سنگھ سوہاگ نے آج کہا ہے کہ شمالی کشمیر کے ضلع بارہمولہ میں پوری کیمپ پر حملہ دراصل ریاست میں جمہوری عمل کو درہم برہم کرنے عسکریت پسندوں کی جان توڑ کوشش ہے۔ انھوں نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہاکہ بظاہر یہ حملہ، انتخابات کے تیسرے مرحلہ کو متاثر کرنے کی ایک ناکام کوشش تھی لیکن میں قوم کو یہ تیقن دیتا ہوں کہ جمہوری عمل کو درہم برہم کرنے اُن عناصر کو اجازت نہیں دی جائے گی۔ جنرل دلبیر سنگھ جوکہ آج صبح یہاں پہونچے، بادامی باغ کنٹونمنٹ میں سکیورٹی عملہ کے شہیدوں کو خراج عقیدت پیش کیا۔ اس موقع پر انھوں نے کہاکہ فوج کی قربانیاں ضائع نہیں ہوں گی اور میں ان فوجیوں کو بہادری کو سلام پیش کرتے ہیں جنھوں نے عسکریت پسندوں سے لڑتے ہوئے اپنی جانیں نچھاور کردیں۔ یقینا ان کی قربانیاں نہ صرف یاد رکھی جائیں گی بلکہ ہمارے حوصلوں کو مزید بلند کریں گی۔ فوجی سربراہ پوری کیمپ پر حملہ کے پیش نظر ریاست میں سلامتی کی صورتحال کا جائزہ لیا جبکہ اس حملہ میں 11 سکیورٹی فورسیس کے اہلکار جاں بحق ہوگئے۔ عسکریت پسندی سے متعلق واقعات میں سرینگر میں لشکر طیبہ کے 2 عسکریت پسند اور جنوبی کشمیر کے تارل ٹاؤن میں گرینیڈ حملہ سے 2 شہری ہلاک ہوگئے تھے۔ اس موقع پر چنار کارپس کے فوجی عہدیداروں نے دہشت گردوں اور مداخلت کاروں کے خلاف جوابی کارروائی کی تفصیلات سے فوجی سربراہ کو آگاہ کیا اور فوج کے حالیہ دو بڑے آپریشن سے بھی واقف کروایا

جس میں 12 عسکریت پسندوں کو مار گرایا گیا۔ فوجی سربراہ نے سکیورٹی فورس کی مستعدی پر اطمینان کا اظہار کیا۔ دریں اثناء کل ایک ہی دن میں دہشت گردانہ حملوں میں 21 افراد بشمول 11 سکیورٹی اہلکار اور 8 عسکریت پسندوں کی موت کے باوجود سیاسی جماعتیں بلا خوف و خطر جموں و کشمیر میں انتخابی مہم چلارہے ہیں گوکہ وزیراعظم نریندر مودی کے پیر کے روز دورہ کے پیش نظر سکیورٹی انتظامات کو مزید سخت کردیا گیا ہے۔ ریاست بھر میں آج صبح سے مختلف سیاسی جماعتوں بشمول حکمراں نیشنل کانفرنس، کانگریس اور اصل اپوزیشن پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی انتخابی ریالیاں اور روڈ شو منعقد کررہے ہیں۔ بالخصوص اضلاع بڈگام، پلوامہ اور بارہمولہ میں واقع 16 اسمبلی حلقوں میں انتخابی مہم میں شدت پیدا ہوگئی ہے جہاں پر 9 ڈسمبر کو رائے دہی منعقد ہوگی۔ آزاد امیدوار بھی انتخابی مہم کے دوران گھر گھر جاکر رائے دہندوں کو انوکھے انداز میں رجھانے کی کوشش کررہے ہیں۔ گوکہ عسکریت پسندوں نے عوام میں نفسیاتی خوف پیدا کرنے کے لئے کل ایک ہی دن میں مختلف مقامات پر حملے کئے تھے جس میں 21 افراد کی موت واقع ہوگئی تھی۔ تاہم سکیورٹی فورسیس نے انتخابی جلسوں اور جلوسوں کے مقامات پر مؤثر حفاظتی انتظامات کئے ہیں تاکہ انتخابی عمل کو متاثر کرنے کی کسی بھی کوشش کو ناکام بنایا جائے۔ جبکہ وزیراعظم کے دورہ کے پیش نظر سرینگر میں اضافی چیک پوسٹس قائم کردیئے گئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT