Wednesday , October 24 2018
Home / Top Stories / جمہوری اقدار کو پامال کرنے کی کوششیں افسوسناک

جمہوری اقدار کو پامال کرنے کی کوششیں افسوسناک

نئی دہلی۔ 14 اگست (سیاست ڈاٹ کام) پارلیمانی اقدار کو پامال کرنے کی کوششوں کو افسوسناک قرار دیتے ہوئے صدرجمہوریہ پرنب مکرجی نے آج کہا کہ ہمارے پارلیمانی اداروں کی شان و شوکت کو بحال کرنا وقت کا تقاضہ ہے۔ جمہوریت کی برقراری کو یقینی بنانا ہی ہماری ذمہ داری ہے۔ انہوں نے پارلیمنٹ میں ہونے والی ہنگامہ آرائی اور خلل اندازی پر شدید ناراضگی

نئی دہلی۔ 14 اگست (سیاست ڈاٹ کام) پارلیمانی اقدار کو پامال کرنے کی کوششوں کو افسوسناک قرار دیتے ہوئے صدرجمہوریہ پرنب مکرجی نے آج کہا کہ ہمارے پارلیمانی اداروں کی شان و شوکت کو بحال کرنا وقت کا تقاضہ ہے۔ جمہوریت کی برقراری کو یقینی بنانا ہی ہماری ذمہ داری ہے۔ انہوں نے پارلیمنٹ میں ہونے والی ہنگامہ آرائی اور خلل اندازی پر شدید ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ مجھے یہ دیکھ کر حیرت ہوتی ہے کہ کیا ہماری جمہوریت اب شوروغل کا ہی نام ہے۔ کیا ہم نے اپنے سکونِ دل اور صبر و تحمل کا دامن چھوڑ دیا ہے۔

اب وقت آگیا ہے کہ ہم اپنے عظیم اداروں کی عظمت رفتہ کو بحال کریں۔ ہماری خوبصورت جمہوریت کی شان و شوکت کو برقرار رکھا جائے۔ یوم آزادی کے موقع پر قوم سے خطاب کرتے ہوئے صدرجمہوریہ پرنب مکرجی نے کہا کہ پارلیمنٹ کو دَنگل میں تبدیل نہیں کیا جانا چاہئے اور نہ ہی اس مقدس ادارہ کو بحث و مباحث کا اکھاڑہ بنایا جائے۔ انہوں نے استفسار کیا کہ کیا ہماری عدالتوں کو انصاف کا مندر نہیں ہونا چاہئے۔ وقت کا تقاضہ ہے کہ ہم ان تمام اداروں کی عظمت کا تحفظ کرنے کیلئے اجتماعی کوشش کریں۔ انہوں نے کہا کہ آزادی ایک جشن ہے۔ اب یہ آزادی ہمارے لئے چیلنج بن رہی ہے۔ ملک کے 68 ویں یوم آزادی کے موقع پر ہندوستان کو ہر فرد کے اختیارات کو مضبوط بنانے کا عہد کرنا ہوگا۔ قابل قدر، پرامن انتخابی عمل کے ذریعہ منتخب ہونے والی جمہوریتوں کی اجتماعی ذمہ داریوں کو ملحوظ رکھنا ہوگا۔ تقریباً تین دہوں بعد واحد جماعتی واضح اکثریت کے ساتھ ایک مستحکم حکومت تشکیل پائی ہے۔ پرنب مکرجی نے کہا کہ گزشتہ انتخابات میں رائے دہی کا58 فیصد سے بڑھ کر 66فیصد ہوگا۔ اس کامیابی نے ہمیں ایک اور موقع دیا ہے کہ ہم پالیسیوں میں اصلاحات لاتے ہوئے حکمرانی کے چیلنجس کو پورا کریں۔

TOPPOPULARRECENT