Monday , June 18 2018
Home / شہر کی خبریں / جناب محمود علی نے ڈپٹی چیف منسٹر کے عہدہ کا جائزہ حاصل کرلیا

جناب محمود علی نے ڈپٹی چیف منسٹر کے عہدہ کا جائزہ حاصل کرلیا

درگاہ یوسفین پر حاضری اور نماز شکرانہ کی ادائیگی ۔اقلیتوں کی خدمت کیلئے وقف ہوجانے کا عزم

درگاہ یوسفین پر حاضری اور نماز شکرانہ کی ادائیگی ۔اقلیتوں کی خدمت کیلئے وقف ہوجانے کا عزم

حیدرآباد۔/8جون، ( سیاست نیوز) تلنگانہ ریاست کے ڈپٹی چیف منسٹر اور وزیر مال کی حیثیت سے آج جناب محمد محمود علی نے ذمہ داری سنبھال لی۔ سکریٹریٹ کے Dبلاک میں واقع چیمبر میں نماز شکرانہ کی ادائیگی کے بعد جناب محمود علی نے علمائے کرام کی دعاؤں کے درمیان پہلی فائیل پر دستخط کرتے ہوئے عہدہ کی ذمہ داری سنبھالی۔ اس موقع پر محکمہ مال کے اعلیٰ عہدیداروں کے علاوہ ٹی آر ایس اقلیتی قائدین، این جی اوز اور ریونیو ایمپلائز اسوسی ایشن کے قائدین کی کثیر تعداد موجود تھی۔ جناب محمود علی نے سکریٹریٹ پہنچنے سے قبل درگاہ حضرات یوسفین ؒ نامپلی پہنچ کر حاضری دی اور چادر گل پیش کی۔ سجادہ نشین فیصل علی شاہ نے ان کا استقبال کیا اور دستاربندی کی۔ اس موقع پر تلنگانہ ریاست کی بھلائی اور اقلیتوں کی ترقی کیلئے دعاء کی گئی۔ وہاں سے ڈپٹی چیف منسٹر سکریٹریٹ پہنچے جہاں بڑی تعداد میں ملازمین کی تنظیموں کے قائدین نے ان کا استقبال کیا۔ چیمبر میں پہنچنے کے بعد جناب محمود علی نے دو رکعت نماز شکرانہ ادا کی جس کے بعد صوفی سلطان قادری شطاری، حامد محمد خاں، زاہد یوسف اور دوسروں نے دعاء کی اور فاتحہ خوانی کی گئی۔ تلنگانہ ریاست کی ترقی، کے سی آر اور محمود علی کی درازی عمر کیلئے دعائیں کی گئیں۔

خصوصی دعاؤں کے بعد جناب محمود علی نے فائیل پر دستخط کرتے ہوئے عہدہ کا جائزہ حاصل کرلیا۔ اس موقع پر ٹی آر ایس کے اقلیتی قائدین مبارکباد پیش کرنے کیلئے ایک دوسرے پر سبقت لے جانے کی کوشش کررہے تھے۔ Dبلاک کی تیسری منزل ٹی آر ایس قائدین اور محمود علی کے حامیوں سے بھر چکی تھی۔ تلنگانہ این جی اوز کے صدر دیوی پرساد نے محمود علی سے ملاقات کرتے ہوئے مبارکباد پیش کی اور ملازمین کی جانب سے مکمل تعاون کا یقین دلایا۔ آئی اے ایس عہدیدار جناب سید عمر جلیل نے بھی ڈپٹی چیف منسٹر سے ملاقات کی اور گلدستہ پیش کرتے ہوئے نیک تمناؤں کا اظہار کیا۔ ریاستی وزیر انفارمیشن ٹکنالوجی کے ٹی راما راؤ بھی ڈی بلاک پہنچے اور آج جائزہ لینے والے ٹی ہریش راؤ اور محمود علی کو مبارکباد پیش کی۔ اس موقع پر اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے ڈپٹی چیف منسٹر نے کہا کہ نظام دور حکومت میں مہاراجہ کشن پرشاد کو وزیر اعظم مقرر کیا گیا تھا اسی تاریخ کو دہراتے ہوئے کے سی آر نے تلنگانہ کے پہلے ڈپٹی چیف منسٹر کی حیثیت سے مسلمان کو نامزد کیا ہے۔ انہوں نے کے سی آر کو مہاتما سے تعبیر کیا اور کہا کہ مہاتما گاندھی نے عدم تشدد کے ذریعہ آزادی کی تحریک چلائی تھی اسی طرح چندر شیکھر راؤ نے بھی 14برسوں تک پُرامن انداز میں تلنگانہ تحریک کے ذریعہ علحدہ ریاست کے حصول میں کامیابی حاصل کی۔ انہوں نے ڈپٹی چیف منسٹر کے عہدہ پر نامزد کئے جانے پر کے سی آر سے اظہار تشکر کیا اور کہا کہ وہ اپنی اس ذمہ داری کو بخوبی انجام دینے کوئی کسر باقی نہیں رکھیں گے اور غریبوں کی خدمت ان کی اولین ترجیح ہوگی۔ محکمہ مال کے تحت غریبوں کی بھلائی سے متعلق اسکیمات کا بہت جلد اعلیٰ عہدیداروں کے ساتھ جائزہ لیا جائے گا۔

غریبوں کو پٹہ جات کی تقسیم اور پنشن جیسی اسکیمات پر موثر عمل آوری کی جائے گی اور محکمہ مال میں آئی اے ایس عہدیدار کی نگرانی میں ہیلپ لائن کا آغاز کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ سرکاری اراضیات کا ازسر نو سروے کرایا جائے گا اس کے علاوہ اوقافی جائیدادوں کا سروے کرتے ہوئے انہیں وقف بورڈ کے حوالے کیا جائے گا۔ڈپٹی چیف منسٹر نے محکمہ مال کی مخلوعہ جائیدادوں پر تقررات کا بھی اعلان کیا۔ انہوں نے کہا کہ ٹی آر ایس حکومت نظم و نسق میں کرپشن اور بے قاعدگیوں کے سخت خلاف ہے اور فرض شناس عہدیداروں کی حوصلہ افزائی کی جائے گی۔ وقف بورڈ سے متعلق سوالات پر جناب محمود علی نے کہا کہ وقف بورڈ کا قلمدان چیف منسٹر کے پاس ہے تاہم وہ ضرورت پڑنے پر چیف منسٹر کو تجاویز پیش کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ ٹی آر ایس حکومت ترقیاتی اقدامات کے ذریعہ پرانے اور نئے شہر کے امتیاز کو ختم کردے گی۔انہوں نے کہا کہ ٹی آر ایس کے انتخابی منشور میں اقلیتوں کے بارے میں جو وعدے کئے گئے ہیں ان پر من و عن عمل کیا جائے گا۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے سرکاری ملازمین اور ان کی تنظیموں سے اپیل کی کہ بہتر حکمرانی کے سلسلہ میں حکومت سے تعاون کریں۔

TOPPOPULARRECENT