Wednesday , September 19 2018
Home / اضلاع کی خبریں / جنسی استحصال کی روک تھام کیلئے سخت اقدامات

جنسی استحصال کی روک تھام کیلئے سخت اقدامات

بیدر 22 نومبر (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ریاستی وزیراعلیٰ سدرامیا نے آج کہاکہ لڑکیوں کی عصمت دری اور اسکولوں میں کمسن طالبات کے جنسی استحصال کے معاملات میں ملوث ملزموں کو سخت سزائیں سنانے ضلعی سطح پر فاسٹ ٹریک عدالتیں قائم کی جائیں گی۔ اُنھوں نے کہاکہ کمسن حالیہ جنسی استحصال میں ملوث افراد کو قرار واقعی سزا دی جانی چاہئے کہ جنسی جنونی اس

بیدر 22 نومبر (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ریاستی وزیراعلیٰ سدرامیا نے آج کہاکہ لڑکیوں کی عصمت دری اور اسکولوں میں کمسن طالبات کے جنسی استحصال کے معاملات میں ملوث ملزموں کو سخت سزائیں سنانے ضلعی سطح پر فاسٹ ٹریک عدالتیں قائم کی جائیں گی۔ اُنھوں نے کہاکہ کمسن حالیہ جنسی استحصال میں ملوث افراد کو قرار واقعی سزا دی جانی چاہئے کہ جنسی جنونی اس طرح کا جرم کرنے کی جرأت نہ کرسکیں۔ یہاں ودھان سودھان کے کانفرنس ہال میں ریاستی سطح کا بچوں کے حقوق اور وزیر اعلیٰ پروگرام کا افتتاح کرنے کے بعد سدرامیا نے بچوں کے مختلف سوالات کے جوابات دیئے اور یہ تیقن دیا کہ خواتین اور لڑکیوں کی عصمت دری اور طالبات کے جنسی استحصال کے معاملات میں ملوث افراد کو بخشا نہیں جائے گا۔ ان کے خلاف حکومت سخت کارروائی کرنے کی پابند ہے۔ اس موقع پر وزیراعلیٰ نے کہاکہ اسکولوں میں بچوں پر ہونے والے ظلم اور جنسی استحصال کی روک تھام حکومت کی ذمہ داری ہے۔ ان معاملات کے تدارک کے لئے حکومت سخت اقدامات کرے گی اور کسی طرح کا سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا۔ اُنھوں نے اعتراف کیاکہ اسکولوں میں کمسن طالبات کی جنسی ہراسانی کی روک تھام کے لئے اسکول انتظامیہ اور والدین کی جتنی ذمہ داری ہے اتنی ہی ذمہ داری حکومت کی بھی ہے۔ مسٹر سدرامیا نے کہاکہ بچے بھگوان کا روپ ہوتے ہیں۔ ان کے ساتھ جنسی استحصال کرنے والے درندہ صفت لوگوں کو سخت سزا دیئے بغیر اس کی روک تھام ممکن نہیں۔ اُنھوں نے یہ بھی کہاکہ جنسی استحصال کا شکار بچوں کے ساتھ پوری ہمدردی برتنے اور ان کے ساتھ شفقت سے پیش آنے کی ضرورت ہے۔ ان معاملات میں ملوث اکثر افراد بچوں کے رشتہ دار یا جان پہچان والے ہوتے ہیں۔ اس لئے والدین کو زیادہ چوکنا رہنے کی ضرورت ہے۔ ان معاملات کی جانچ کے دوران یہ بات سامنے آئی ہے کہ بچوں کا جنسی استحصال کرنے والے اکثر لوگ انھیں کے رشتہ دار ہوتے ہیں۔ اس اجلاس میں ریاستی وزراء مسٹر ایچ انجیا ریاستی قانون ساز کونسل کے سابق چیرمین ویرنامتی کئی کونسل کے سینئر اراکین بسواراج ہورٹی اگریشن کرنارڈ بچوں کے تحفظ کیلئے تشکیل لیجسلیچرس کمیٹی کے آر وی وینکٹیش نے بھی شرکت کی۔

TOPPOPULARRECENT