Monday , April 23 2018
Home / Top Stories / جنوبی ریاستوں کا 15 ویں فینانس کمیشن کے قیام کا مطالبہ

جنوبی ریاستوں کا 15 ویں فینانس کمیشن کے قیام کا مطالبہ

مرکزی وزیرفینانس ارون جیٹلی نے جانبداری کا الزام مسترد کردیا
تھرواننتاپورم ۔ 10 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) تین جنوبی ریاستوں نے آج 15 ویں فینانشیل کمیشن کے قیام کا مطالبہ کیا تاکہ ریاستوں کی ترقی کیلئے مختص کئے جانے والے فنڈس کے سلسلہ میں کوئی تنازعہ پیدا ہونے پر اسے کمیشن کے سپرد کیا جاسکے۔ جنوبی ہند کی ریاستی حکومتوں نے مرکزی وزیرفینانس ارون جیٹلی پر الزام عائد کیا کہ وہ وفاقی اصولوں کی خلاف ورزی کررہے ہیں اور جنوبی ہند کی ریاستوں سے جانبداری کا سلوک کررہے ہیں حالانکہ دستورہند میں تمام ریاستوں کو مساوی درجہ دینے کا تیقن دیا گیا ہے۔ مرکزی وزیرفینانس ارون جیٹلی نے جانبداری کے الزام کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ جنوبی ہند کی ریاستوں کو رقومات مختص کرنے کے سلسلہ میں کسی بھی قسم کی جانبداری اختیار نہیں کی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس آبادی پر قابو پانے کیلئے مطالبہ کررہی ہے جس پر مرکزی حکومت نے سنجیدگی کارروائیاں کی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ فیس بک پر شائع شدہ اطلاعات پر بھروسہ نہیں کیا جاسکتا۔ مرکزی وزیرفینانس نے ریاستی حکومت کے وزرائے فینانس سے آج ملاقات کرکے ان سے تبادلہ خیال کیا۔ اس مخصوص چوٹی کانفرنس میں کیرالا، کرناٹک اور آندھراپردیش نے بھی شرکت کی۔

علاوہ ازیں کانفرنس زیراقتدار مرکزی زیرانتظام علاقہ پڈوچیری کی نمائندگی بھی کی۔ دیگر باتوں کے علاوہ جنوبی ہند کی ریاستوں نے سختی سے ٹی او آر کی سفارشات کی مخالفت کی اور کہا کہ ان کیلئے 2011ء کے مردم شماری کے اعدادوشمار استعمال کئے گئے ہیں جبکہ ٹیکس کے مالیہ کیلئے 1971ء کی مردم شماری کے اعداد و شمار کو بنیاد بنایا گیا ہے۔ اناڈی ایم کے زیراقتدار ٹاملناڈو اور ٹی آر ایس زیراقتدار تلنگانہ نے مخصوص چوٹی کانفرنس میں شرکت نہ کرنے کا فیصلہ کیا۔ یہ مخصوص چوٹی کانفرنس کیرالا میں منعقد کی گئی ہے جس میں 15 ویں فینانس کمیشن کے بارے میں عام اندیشوں کے مسائل پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ بعدازاں ایک پریس کانفرنس میں تفصیلات کا انکشاف کرتے ہوئے کیرالا کے وزیرفینانس ٹی ایم تھامس ایزک نے کہا کہ اسی طرح کی مخصوص چوٹی کانفرنس اپریل کے اواخر یا مئی کے پہلے ہفتہ میں آندھراپردیش کے شہر وشاکھاپٹنم میں منعقدکی جائے گی۔

 

مرکزی وزیر فینانس ارون جیٹلی کی جاریہ ہفتہ مزید دو ڈائیلاسیس
نئی دہلی ۔ /10 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) مرکزی وزیر فینانس ارون جیٹلی جو گردے کی بیماری میں مبتلا ہیں امکان ہے کہ جاریہ ہفتہ ان کے مزید دو ڈائیلاسیس کئے جائیں گے ۔ اس کے بعد وہ پیر کے دن سے دوبارہ اپنا کام شروع کرسکیں گے ۔ 65 سالہ جیٹلی کو جمعہ کی شام ایمس میں شریک کروایا گیا تھا ۔ دو دن نگرانی کے بعد ان کی ڈائیلاسیس کل کی گئی تھی ۔ انہیں دواخانہ سے ڈسچارج کردیا گیا تھا تاکہ وہ ماحول پر قابو پانے کی کوشش کرسکیں ۔ ذرائع کے بموجب جاریہ ہفتہ ان کے دو مزید ڈائیلاسیس کئے جائیں گے ۔ وہ گزشتہ پیر سے اپنا کام انجام نہیں دے رہے ہیں ۔ امکان ہے کہ /16 اپریل سے ان کے کام کا دوبارہ آغاز ہوجائے گا ۔

TOPPOPULARRECENT