Thursday , December 14 2017
Home / ہندوستان / جنگل میں روپوش عسکریت پسندوں کا مقابلہ پرخطر

جنگل میں روپوش عسکریت پسندوں کا مقابلہ پرخطر

شمالی کشمیر میں فوج کی محاصرہ اور تلاشی مہم سے دستبرداری
سرینگر ۔ 9۔ ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) شمالی کشمیر میں کیواڑہ کے جنگلاتی علاقہ میں روپوش عسکریت پسندوں کے خلاف محاصرہ اورتلاشی مہم سے دستبرداری اختیار کرلی گئی، گزشتہ 27 یوم سے جاری اس مہم میں 2 عسکریت پسند اور متعدد فوجی ہلاک ہوگئے ہیں۔ ایک سینئر آرمی آفیسر نے بتایا کہ ہم جس طریقہ سے محاصرہ اور تلاشی مہم چلا رہے ہیں، مزید جاری رکھنے کے متحمل نہیں ہوسکتے جو کہ ایک پر خطر اور جان لے وا مہم ہے ۔ تلاشی مہم میں یہ دیکھنے میں آیا ہے کہ عسکریت پسند فائرنگ شروع کرنے کیلئے لمحہ آخر تک انتظار کرتے ہیں ، یہی وجہ ہے کہ ہم نے مہم روک دینے کا فیصلہ کیا ہے ۔ جنرل آفیسر کمانڈنگ آف آرمی 15 ۔ کارپس لیفٹننٹ جنرل ستیش نے بتایا کہ عسکریت پسند کسی بھی متحرک سایہ پر فائرنگ کردیئے ہیں جبکہ سپاہیوں کو احتیاط کے ساتھ حالات کا مقابلہ کرنا پڑتا ہے، جس کے باعث گھنے جنگل میں مقابلہ آرائی دشوار بن جاتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ عسکریت پسند کسی پر بھی فائرنگ کیلئے آزاد ہیں جس سے خوفزدہ ہوکر بعض اوقات ہم خود ہمارے ساتھیوں پر فائرنگ کردیتے ہیں۔ اس طرح کی پیچیدہ صورتحال میں تلاشی مہم جاری رکھنا ممکن نہیں ہے ۔ گزشتہ 27 یوم سے جاری مہم میں دو عسکریت پسند کے علاوہ ایک کرنل سنتوش مہادیک اور ایک سپاہی ہلاک اور تیسرا فوجی شدید زخمی ہوگیا ۔ جنگل میں عسکریت پسندوں کی روپوشی کے بارے میں دریافت کرنے پر انہوں نے بتایا کہ ان کا اتہ پتہ نہیں چل سکا۔ تاہم انہوںنے کہا کہ عسکریت پسندوں کے خلاف حسب معمول کارروائی جاری رہے گی۔ فوجی عہدیداروں نے مزید بتایا کہ گزشتہ 10 سال کے دوران سرحد پار سے دخل اندازی میں نمایاں کمی واقع ہوگئی اور سرحدوں پر خاردار تاروں کی تنصیب کے بعد مداخلت کاری مکمل ختم ہوجائے گی ۔

TOPPOPULARRECENT