Monday , November 20 2017
Home / Top Stories / جوبلی ہلز حیدرآباد میں المناک کار حادثہ

جوبلی ہلز حیدرآباد میں المناک کار حادثہ

وزیر بلدی نظم ونسق آندھرا پردیش نارائنا کے فرزند اور دوست ہلاک،مرکزی و ریاستی وزراء کا اظہار دکھ
حیدرآباد۔ 10مئی (سیاست نیوز) شہر حیدرآباد کے جوبلی ہلز کی روڈ نمبر 36میں پیش آئے بھیانک کار حادثہ میں آندھراپردیش کے وزیر بلدی نظم ونسق نارائنا کے فرزند سمیت ان کے ایک دوست کی ہلاکت ہوگئی۔ یہ حادثہ کل رات اُس وقت پیش آیاجب شدید بارش کے دوران میٹرو ریل کے ستون کو ان کی کار نے ٹکر دے دی ۔عینی شاہدین نے بتایا کہ یہ کار کافی تیز رفتاری سے جارہی تھی۔ اے پی کے وزیر نارائنا کے فرزند نشیت نارائنا اور ان کے ساتھی راجہ روی ورما بھی ہلاک ہوگئے ۔ ان دونوں کو شدید زخمی حالت میں اپولو اسپتال منتقل کیا گیا تاہم اسپتال منتقلی کے دوران ان دونوں کی موت ہوگئی ۔حادثہ کے وقت وزیر کے بیٹے نے سیٹ بیلٹ بھی نہیں باندھا تھا ۔ یہ حادثہ کل شب تقریبا2.30 بجے پیش آیا۔پولیس کی ٹیم جو اس علاقہ سے گزر رہی تھی  اس نے گاڑی کو دیکھا اور زخمیوں کو نکال کر اسپتال منتقل کیا تاہم ڈاکٹرس نے ان دونوں کو مردہ قرار دیا۔پولیس نے جس کار کا معائنہ کیا اس بات کو پایا کہ کار کے ایر بیگس ،ٹکر کے اثر سے کھل گئے تھے تاہم ان کے کھلنے سے راحت نہیں ملی۔یہ دونوں دوست ایک پارٹی میں شرکت کے بعد واپس ہورہے تھے ۔ڈی سی پی ویسٹ زون اے وینکیشور راو نے میڈیا سے کہا کہ اس حادثہ میں کار کو شدید نقصان پہنچا اور اس بات کا بھی پتہ چلانے کی کوشش کی جارہی ہے کہ آیا اس کار میں شراب کی بوتلیں تو نہیں تھیں۔ انہوں نے کہاکہ ہمیں شبہ ہے کہ یہ کار تیز رفتاری سے چلائی جارہی تھی۔ہم اس علاقہ میں لگے سی سی ٹی وی کیمرے کے فوٹیج کی جانچ کریں گے تاکہ اس بات کی تصدیق ہوسکے ۔عثمانیہ اسپتال کے ڈاکٹرس کی ٹیم نے اپولو اسپتال پہنچ کر نشیت نارائنا کی نعش کا پوسٹ مارٹم کیا ۔بعدازاں ان کے ارکان خاندان نے نعش کو آندھراپردیش کے ضلع نیلور کو منتقل کیا جہاں کل ان کی آخری رسومات انجام دی جائیں گی ۔ نعش کا پوسٹ مارٹم کرنے والے ڈاکٹرس نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہاکہ شراب پی کر گاڑی چلانے سے حادثہ کا پتہ نہیں چلا کیونکہ نشیت کے جسم میں شراب نہیں پائی گئی۔انہوں نے کہاکہ جسم میں جگہ جگہ فریکچر ہونے اور جسم کے اندرونی اعضا کے شدید طورپر متاثر ہونے سے ان کی موت ہوئی۔

انہوں نے کہاکہ اس حادثہ کے اندرون دس منٹ ہی نوجوان کی موت ہوگئی۔انہوں نے کہاکہ نشیت کار چلارہے تھے ۔اس حادثہ کے سلسلہ میں ایک واچ مین نے پولیس کو بتایا کہ زور دار آواز سے وہ بیدار ہوا اور دیکھا کہ کار نے میٹرو ریل کے ستون کو ٹکر دے دی ہے ۔نشیت نارائنا، نارائنا تعلیمی اداروں کے ڈائرکٹر کے طورپر کا م کر رہے تھے ۔اس حادثہ کی اطلاع پر آندھراپردیش کے وزیراعلی این چندرابابونائیڈو جو امریکہ کے دورہ پر ہیں انہوں نے شدید افسوس کا اظہار کیاہے۔ انہوں نے نارائنا اور ان کے ارکان خاندان سے تعزیت کا اظہار کیا۔حادثہ کی اطلاع ملتے ہی تلنگانہ کے وزیر آبپاشی ہریش راؤ اپولو اسپتال پہنچے ا ور تفصیلات حاصل کیں۔ وزیر نارائنا جو لندن کے دورہ پرہیں، اپنے بیٹے کی حادثہ میں موت پر فوری حیدرآباد کے لئے روانہ ہوگئے ۔اے پی کے وزیر انفارمیشن ٹکنالوجی لوکیش جو دہلی کے دورہ پر ہیں انہوں نے بھی اپنا دورہ مختصر کردیا اورحیدرآباد کیلئے روانہ ہوگئے۔نارائنا کے  فرزند کی ہلاکت کے واقعہ پر مختلف وزرا اور عوامی نمائندوں نے گہرے دکھ کا اظہار کیا ہے ۔ اطلاعات ونشریات کے مرکزی وزیرایم وینکیا نائیڈوسمیت تلنگانہ کے وزرا کے ٹی راما راو، ہریش راو،اے پی اسمبلی کے اسپیکر کے سیواپرساد راو ، اے پی کونسل کے چیرمین چکراپانی،اے پی کے نائب وزیراعلی این چناراجپا، وزرا ستیہ نارائنا ،کے ایس جواہر ،کے سرینواس اور دوسروں نے گہرے دکھ کا اظہار کیا ہے ۔ انہوں نے نارائنا کے غمزدہ ارکان خاندان کو پُرسہ دیا ۔اے پی کے وزیر کے سرینواس نے تعزیتی پیام جاری کرتے ہوئے اس حادثہ میں نشیت کی موت پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا۔شہر حیدرآباد میں آندھراپردیش کے وزیر بلدی نظم ونسق نارائنا کے مکان میں غم کی لہر دیکھی گئی ۔تلنگانہ کے وزیراعلی کے چندرشیکھرراو نے بھی اس واقعہ پر گہرے دکھ اور افسو س کا اظہار کیا ہے ۔انہوں نے غمزدہ ارکان خاندان سے تعزیت کا اظہار کیا ۔تلنگانہ کے نائب وزیر کڈیم سری ہری نے اپولو اسپتال پہنچ کر نارائنا کے افراد خاندان کو پُرسہ دیا ۔کانگریس کے سابق وزیر پنالہ لکشمیا ، ٹی آر ایس کے ایم ایل اے ای دیاکر راواور جناسینا پارٹی سربراہ پون کلیان نے بھی پُرسہ دیا۔

TOPPOPULARRECENT