Saturday , November 18 2017
Home / جرائم و حادثات / جوبلی ہلز میں رہزن کی فائرنگ ، بین ریاستی ٹولی کا منصوبہ پولیس نے ناکام بنادیا

جوبلی ہلز میں رہزن کی فائرنگ ، بین ریاستی ٹولی کا منصوبہ پولیس نے ناکام بنادیا

حیدرآباد /20 اگست ( سیاست نیوز ) شہر کے پاش علاقہ جوبلی ہلز میں آج رہزنوں کی ٹولی کی اچانک فائرنگ سے سنسنی پھیل گئی ۔ ٹاسک فورس کی کارروائی کے دوران رہزنوں نے فائرنگ کی جس میں ایل اینڈ ٹی میٹرو ورکس کا ملازم زخمی ہوگیا ۔ باوثوق ذرائع نے بتایا کہ کمشنر ٹاسک فورس کو شہر میں بین ریاستی ٹولی کی موجودگی اور بڑے پیمانے پر رہزنی کی واردات سے متعلق اطلاع مل چکی تھی چنانچہ کرناٹک سے تعلق رکھنے والے رہزنوں پر گذشتہ تین دن سے کڑی نظر رکھی جارہی تھی ۔ رہزنوں نے مادھاپور میں واقع بگ سی موبائل شوروم کے منیجر کو رقم کی منتقلی کے دوران لوٹنے کا منصوبہ تیار کیا تھا ۔ ویسٹ زون ٹیم کے ٹاسک فورس انسپکٹر مسٹر ایل راجہ وینکٹ ریڈی سادہ لباس میں ملبوس اپنی ٹیم کے ہمراہ رہزنوں کا مادھاپور سے تعاقب کر رہے تھے اور رہزن جب جوبلی ہلز روڈ نمبر 36 پہنچے تو وہاں انہیں گرفتار کرنے کی کوشش کی گئی جس کے دوران ایک رہزن فہیم مرزا نے پولیس پارٹی پر دیسی ساختہ بندوق سے فائرنگ کردی ۔ فائرنگ کی آوازسے مقامی افراد میں دہشت پھیل گئی اور اس واقعہ میں ایل اینڈ ٹی میٹرو کا ملازم دھرمیندر سنگھ زخمی ہوگیا ۔اس کے کاندھے پر گولی لگی اور اسے دواخانہ منتقل کیاگیا ۔ رہزنوں کی ٹولی کی جانب سے مصروف ترین علاقہ میں اچانک فائرنگ سے شہر میں سنسنی پھیل گئی اور ٹاسک فورس نے فہیم مرزا عرف عبداللہ کو موقع واردات پر حراست میں لے لیا جبکہ عبدالقادر وہاں سے فرار ہوگیا لیکن کچھ ہی دیر میں اسے بھی حراست میں لے لیا گیا ۔ ذرائع نے مزید بتایا کہ بگ سی موبائیل شورم کے ملازم سمیع ساکن ٹولی چوکی کی مدد سے کرناٹک کے رہزنوں نے یہ منصوبہ تیارکیا تھا لیکن پولیس کو اطلاع ملنے پر تین دن قبل سمیع کو حراست میں لے لیا گیا۔ پولیس سمیع کے بیان کی بنیاد پر ان رہزنوں پرکڑی نظر رکھے ہوئے تھی ۔ آج انہیں گرفتار کرنے کیلئے ٹاسک فورس کی خصوصی ٹیم خفیہ آپریشن انجام دینے کیلئے انہیں رنگے ہاتھوں گرفتار کرنا چاہتی تھی ۔ ذرائع نے بتایا کہ پولیس کو مقامی مخبر نے رہزنوں کے منصوبے سے آگاہ کیا ۔ فائرنگ کے واقعہ کے بعد کمشنر پولیس حیدرآباد مسٹر ایم مہیندر ریڈی نے مقام واردات پر پہونچ کر وہاں کا معائنہ کیا ۔ ٹاسک فورس نے اس واقعہ میں ملوث تمام رہزنوں کو حراست میں لے کر تفتیش کا آغاز کردیا ہے اورکل ان کی گرفتاری کا کل اعلان کیا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT