Thursday , November 15 2018
Home / Top Stories / جگتیال میں انتہائی خوفناک حادثہ ، بس کھائی میں گرگئی ، 57 افراد ہلاک

جگتیال میں انتہائی خوفناک حادثہ ، بس کھائی میں گرگئی ، 57 افراد ہلاک

دلخراش مناظر دیکھ کر ہر کوئی غم سے نڈھال ، محکمہ آر ٹی سی پر لاپرواہی کا الزام ، ڈپو منیجر معطل ، اہم قائدین کے دور ے

مسلم نوجوانوں نے نعشوں و زخمیوں کو دواخانہ پہنچایا

جگتیال11؍ستمبر (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) جگتیال ضلع ملیال منڈل موضع کونڈاگٹو پر آج صبح 11بجے دن پیش آئے خوفناک حادثہ میںآرٹی سی جگتیا ل ڈپو بس جس کا نمبر
AP28Z231
ہے بس میں گنجائش سے زیادہ 86افراد سوار ہونے پر کنڈاگٹو کی گھاٹ کے پاس بریک فیل ہوجانے پر بس بے قابو ہوکر کھائی میں گرگئی، مسافرین کو بس کے شیشے توڑ کر نکالا گیا ۔جس کی وجہ سے 28افراد برسر موقع ہلاک ہوگئے ، اطلاع ملتے ہی جگتیال ضلع کلکٹر ڈاکٹر اے شرت ضلع ایس پی سندھو شرما ،اور کمشنر آف پولیس کریم نگر کملا سن ریڈی کے علاوہ سابقہ رکن پارلیمنٹ کریم نگر پونم پربھاکر ،کانگریس پریسیڈنٹ مرتینجم نے مقام حادثہ پہنچ کر زخمیوں اور نعشوں کو108ایمبولینس کے علاوہ خانگی ایمبولینس اور دیگر جیپ ،وغیرہ سے جگتیال ایریا ہاسپٹل منتقل کیاگیا۔ جگتیال میں یہ خبر عام ہوتے ہی رکن اسمبلی ٹی جیون ریڈی ، اور ٹی آر ایس حلقہ انچارج ڈاکٹر ایم سنجے کمار فوری ہاسپٹل پہنچ گئے،جگتیال ایریا ہاسپٹل پر زخمیوں اور نعشوں کو منتقل کرنے میں مسلم فلاحی و سماجی تنظیموں کے ذمہ داران نے انسانی ہمدردی کا ثبوت پیش کیا۔جگتیال ایریا ہاسپٹل پر عوام کا اژدھام جمع ہوگیا اور ہاسپٹل پر دل خراش منظر دیکھ کر ہر کوئی غم سے نڈھال ہوگیا۔ جگتیال ایریا ہاسپٹل میں زخمیوں کو علاج کیلئے بیڈس کی کمی کی وجہ سے جہا ں جگہ ملی وہاں پر نیچے ڈالدیا گیا ۔دوران علاج جگتیال میں 23افراد فوت ہوگئے ،جبکہ شدید زخمیوں کو کریم نگر ہاسپٹل منتقل کیا گیا جہاں پر دوران علاج5افراد فوت اور حیدرآباد میںایک شخص فوت ہونے کی اطلاع ہے، جملہ 57افراد میں 27خواتین اور 07بچے شامل ہیں، فو ت ہونے والوں میں بس ڈرائیور کے علاوہ ایک حاملہ خاتون بھی شامل ہے جبکہ کنڈاکٹر شدید زخمی ہے، ایر یا ہاسپٹل میں جگہ کی کمی کی وجہ سے جگتیال کہ خانگی ہاسپٹلس میں بھی زخمیوںکو منتقل کیا گیا ۔جگتیال ضلع میں یہ پہلا خوفناک حادثہ ہے،جس میں 57افراد ہلاک ہوگئے ہیں،متوفی افراد خاندان رشتہ داروں نے اس واقعہ کو
RTC
جگتیال کی غلطیوں کی وجہ سے پیش آنے کا الزام لگایا۔ گھاٹ کا یہ راستہ بند کردیا گیا تھاچند سال قبل اسی گھاٹ سے لاری کھائی میں گرجانے سے سات یاتری برسر موقع ہلاک ہوئے تھے اور کئی زخمی ہوگئے تھے۔ جگتیال ڈپو مینجر زیادہ کلکشن کیلئے
RTC
بس کے روٹ کو گذشتہ پانچ یوم قبل ہی تبدیل کیا ، جس کے نتیجہ میں یہ حادثہ پیش آیا، ہلاک ہونے والوں میں سب کا تعلق ضلع جگتیال کوڈمیال منڈل کے ترملہ پیٹھ ،شنی وارم پیٹھ،ہمت راو پیٹھ،رام ساگر،تمیا پلی،سے ہے، حادثہ کی اطلاع ملتے ہی ریاستی کارگذار وزیر ایٹالا راجندر، گورنمنٹ چیف ویپ کوپلا ایشور ،کورٹلہ ایم ایل اے ودیا ساگر راو ،چپہ دنڈی ایم ایل اے بڈگے شوبھا ،ZP چیرمین تولا اوما،کے علاوہ پونم پربھاکر ،مرتینجم ،جگتیال
TDP
ضلعی صدر ودیا ساگر راو اور دیگر نے پہنچ کر زخمیوں کی عیادت اور میتوں کا دیدار کیا ،تلگو دیشم قائدین نے ایٹالا راجندر سے ہلا ک ہونے والوں کو 20لاکھ روپئے ایکس گریشیا دینے کا اور زخمیوں کو 10لاکھ روپئے دینے کا مطالبہ کیا۔ اور اس واقعہ پر اظہار افسوس کیا ،تلگودیشم ریاستی صدر ایل رمنا کی جانب سے فوت ہونے والوں کو فی کس 25ہزار روپئے امداد کا اعلان کیا گیا، اس موقع پر ریاستی وزیر ایٹالا راجندر نے میڈیا کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کی جانب سے 5لاکھ کے علاوہ فوت ہونے والوں میں
TRS
پارٹی رکنیت حاصل کرنے والے فرد کو فی کس پارٹی کی جانب سے 2لاکھ روپئے کی امداد کا اعلان کیا اسی طرح فوت ہونے والوں میں کسان ہوتو بیما اسیکم کے تحت 5لاکھ روپئے کی علحدہ امداد کا اعلان کیا،اور
RTC
کی جا نب سے فی کس 3لاکھ روپئے کا ایکس گریشاء کا اعلان کیا ،اس واقعہ کی اطلاع پاکر چیف منسٹر کے سی آرکی ہدایت پر ریاستی وزیر ٹرانسپورٹ مہندر ریڈی ،ریاستی وزیر بلدیہ نظم و نسق کے ٹی آر ،اور رکن پارلیمنٹ کے کویتا ،
RTC
چیرمین سوماراپو ستیانارائینہ ،نے بذریعہ ہیلی کیاپٹر حیدرآباد سے ٹھیک 4.30بجے جگتیال پہنچ کر ایریا ہاسپٹل میں زخمیوں کی عیادت اور اور نعشوں کادیدار کیا۔ اس موقع پر وزیر ٹرانسپورٹ نے میڈیا کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ اس حادثہ کی خبر سنتے ہی کار گذار ریاستی چیف منسٹر کے سی آر غموں سے نڈھال ہوگئے ،اور فوری ہمیں جگتیال جانے کیلئے ہدایت دی ،انہوں نے حادثہ میں ہلاک ہونے والوں کو حکومت کی جانب سے 5لاکھ روپئے ایگس گریشیا اور زخمیوں کو بہترین علاج کے علاوہ ذہنی اور جسمانی معذور ہونے والوں کو حکومت کی جانب سے امداد کی فراہمی کا تیقن دیا۔ انہوں نے آج پیش آئے حادثہ پر رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ گنیش تہوار سے قبل اس طرح کا حادثہ پیش آنا بہت افسوس کی بات ہے جن کے بھی گھر ماتم میں بدل گئے ہیں ہم انکے ماتم میں برابر کے شامل ہیں، حکومت کے جانب سے دئے جارہے ایکس گریشیا،ایک رقم ہے لیکن کھوئی ہوئی جان واپس نہیں آتی ، انہوں نے کہا کہ
RTC
بس میں عوام کو سہولت بخش سفر کیلئے حکومت کی جانب سے بارہا توجہ دلوائی جارہی ہے، اس بس میں گنجائش سے زیادہ مسافرین کو سوار کرنے پر یہ حادثہ پیش آنے پر
RTC
جگتیال ڈپو مینجرہنمنت راؤ کو ذمہ دار ٹھہراتے ہوئے انہیں خدمات سے معطل کرنے کا اعلان کیا۔ اور اس واقعہ کی مکمل تحقیقات کا تیقن دیا حالیہ دنوں حیدرآباد میں پیش آئے
RTC
بس حادثہ میں تین افراد فوت ہونے کی بھی تحقیقات کی بات کہی، بعد ازاں تمام نے بذریعہ کار مقام حادثہ پہنچ کر معائنہ کیا ،اس موقع پر مقامی پولیس سرکل انسپکٹر پرکاش نے ایریا ہاسپٹل نعشوں کی اور زخمیوں کی منتقلی میں اور ٹریفک کنٹرول کرنے میں اہم رول ادا کیا۔

TOPPOPULARRECENT