Friday , September 21 2018
Home / Top Stories / جگنیش میوانی نے عوام سے کہاکہ وہ کرناٹک میں مودی کی ریالی میں’’رکاوٹ‘‘ کھڑی کریں

جگنیش میوانی نے عوام سے کہاکہ وہ کرناٹک میں مودی کی ریالی میں’’رکاوٹ‘‘ کھڑی کریں

بنگلور۔ گجرات کے رکن اسمبلی جگنیش میوانی نے جمعہ کے روز لوگوں سے کہاکہ 15اپریل کے روز منعقدہ وزیر اعظم نریندر مودی کی ریالی میں رکاوٹ کھڑی کریں اور ان سے ملازمتیں فراہم کرنے کے متعلق وعدے پر سوال کریں۔

انہوں نے شہر سے دوسو کیلومیٹرکے فاصلے پر واقع چترادرگا میں رپورٹرس سے کہاکہ’’لوگ اپریل15کو پارٹی کی مہم چلانے کے لئے منعقد کی گئی مودی کی ریالی میں جائیں ہوا میں کرسیاں پھینک کر وہاں پر خلل ڈالیں۔

اپنی طرف توجہہ مبذول کرائیں اور نوجوانوں کو دو کروڑ ملازمتیں فراہم کرنے کے متعلق وعدہ پر سوال پوچھیں‘‘۔ تاہم بی جے پی کے اسٹیٹ یونٹ ترجمان شانتارام نے ائی اے این یس سے کہاکہ پارٹی کی جانب سے بنگلور میں15اپریل کو جب مودی آرہے ہیں اس روز ناتو کوئی ریالی منعقد کی ہے اور نہ ہی وہ یہاں پر خطاب کریں گے۔

انہوں نے کہاکہ ’’ ہم نے چترادرگا ڈپٹی کمشنر کے پاس مودی کے خلاف اشتعال انگیزی اور ریالی میں خلل ڈالنے کے لئے لوگوں کو اکسانے کی جگنیش میوانی کے بیان کے ضمن میں شکایت درج کرائی ہے‘‘۔ سوشیل میڈیاپر وائیرل ویڈیو جس میں میوانی رپورٹرس سے یہ کہتے ہوئے سنائی دے رہے ہیں کہ بی جے پی کو دوبارہ جنوبی ہند میں داخل ہونے نہیں دینا چاہئے ۔

میوانی نے کہاکہ ’’ اگر مودی جواب نہیں دے سکیں تو انہیں کہنا چاہئے کہ وہ اپنا دفتر چھوڑ دیں اور ہمالیہ کی رام مندر میں جاکر آرام کریں‘‘۔

کرناٹک کے مجوزہ اسمبلی انتخابات میں کسی بھی پارٹی کی حمایت نہ کرنے کے متعلق وضاحت کرتے ہوئے میوانی نے کہاکہ ریاست میں ان کے دورے کا مقصد صرف فسطائیت کو جنوبی ہند میں داخلے سے روکنے کے لئے عوام میں شعور بیدار کرنا ہے

۔گجرات دلت لیڈر نے زور دیتے ہوئے کہاکہ ’’ کرناٹک کی عوام کو چاہئے کہ وہ مودی سے پچھلے چار سالوں میں کئے گئے وعدوں پر بھی سوال کریں۔

انہیں دوبارہ ریاست میں اقتدار میںآنے نہیں دینا چاہئے۔ میں لوگوں سے اپیل کرتاہوں کہ وہ بی جے پی کوووٹ نہ دیں‘‘۔

بی جے پی چترادرگاضلع یونٹ صدر کے ایس نوین نے میوانی کے خلاف ریٹرنگ آفیسر سے بھی ایک شکایت کی ہے‘ اودر کہاکہ ریاست میں اسمبلی انتخابات کے پیش نظر لوگوں کو اشتعال دلانے اور انہیں بھڑکانے کی کوشش کے ضمن میں کاروائی کی جائے

TOPPOPULARRECENT