Tuesday , February 20 2018
Home / شہر کی خبریں / جگن موہن ریڈی کو پارٹی کے ارکان پارلیمنٹ سے استعفی پیش کروانے کا چیالنج ماضی میں بھی صدر وائی ایس آر کانگریس کی دھمکیاں بے سود ثابت ، جے سی دیواکر ریڈی

جگن موہن ریڈی کو پارٹی کے ارکان پارلیمنٹ سے استعفی پیش کروانے کا چیالنج ماضی میں بھی صدر وائی ایس آر کانگریس کی دھمکیاں بے سود ثابت ، جے سی دیواکر ریڈی

حیدرآباد /14 فروری ( سیاست نیوز ) تلگودیشم پارٹی قائد و رکن پارلیمان مسٹر جے سی دیواکر ریڈی نے ریاست کو خصوصی موقف کے مسئلہ پر مرکزی حکومت اپنے ردعمل کا اظہار نہ کرنے کی صورت میں وائی ایس آر کانگریس پارٹی کے ارکان پارلیمان کی جانب سے استعفی پیش کرنے صدر وائی ایس آر کانگریس پارٹی و قائد اپوزیشن مسٹر وائی ایس جگن موہن ریڈی کے بیان پر اپنی شدید برہمی کا اظہار کیا اور چیالنج کیا کہ اگر وائی ایس جگن موہن ریڈی میں ہمت ہوتو ارکان پارلیمان سے آج ہی استعفی پیش کرواکر دکھائیں ۔ انہوں نے کہا کہ ماہ اپریل میں مستعفی ہونے کی صورت میں ضمنی انتخابات کی کوئی توقع نہیں رہے گی ۔ انہوں نے یاد دلایا کہ گذشتہ عرصہ کے دوران بھی مسٹر جگن موہن ریڈی نے اپنے ارکان پارلیمان نے استعفی پیش کروانے کا ا علان کیا تھا ۔ لیکن وہ ناکام رہے ۔ مسٹر جے سی دیواکر ریڈی نے بی جے پی قائد مسٹر وشنو کمار راجہ کے اس بیان پر کہ لوک سبھا میں تلگودیشم پارٹی کے ارکان کا طرز عمل ٹھیک نہ رہنے پر کئے ہوئے ریمارکس پر بھی سخت تنقید کرتے ہوئے شدید برہمی کا اظہار کیا اور بتایا کہ مسٹر شیوا پرساد رکن پارلیمان بنیادی طور پر ایک فلم آرٹسٹ ہیں ۔ جس کی وجہ سے ہی وہ اپنا روپ اسی طرح کا بنایا تھا ۔ تلگودیشم رکن پارلیمان نے اس توقع کااظہار کیا کہ 5 مارچ تک ریاست آندھراپردیش کیلئے مرکزی حکومت بہرصورت فنڈز فراہم کرے گی ۔

 

اے پی میں ٹیچرس تقررات امتحان ’’ ٹیٹ ‘‘ شیڈول کا اعلان21 فروری تا 3 مارچ آن لائین امتحانات کی تیاریاں مکمل

یدرآباد /14 فروری ( سیاست نیوز ) ریاست آندھراپردیش میں اساتذہ کی مخلوعہ جائیدادوں پر تقررات عمل میں لانے کیلئے 21 فروری تا 3 مارچ تک ٹیٹ ٹیچرس اہلیتی ٹسٹ کا آن لائین کے ذریعہ انعقاد عمل میں لایا جائے گا ۔ وزیر فروغ انسانی وسائل ریاست آندھراپردیش مسٹر جی سرینواس راؤ نے یہ بات کہی اور ان امتحانات کے سلسلہ میں وزیر نے تمام ڈسٹرکٹ ایجوکیشنل آفیسرس کے ساتھ ٹیلی کانفرنس کے ذریعہ خطاب کرتے ہوئے ٹیٹ کے انتظامات کا جائزہ لیا اور ٹیٹ امتحانی مراکز پر کی گئی غلطیوں پر نہ صرف برہمی کا اظہار کیا بلکہ ڈی ای اوز کی کارکردگی پر اپنی مایوسی کا اظہار کیا ۔

TOPPOPULARRECENT