Saturday , September 22 2018
Home / شہر کی خبریں / جگن کا مقدمات سے بچنے سکیولرازم سے فرار

جگن کا مقدمات سے بچنے سکیولرازم سے فرار

صدر وائی ایس آر کانگریس کی مودی سے ملاقات پر تنقید : رگھوویرا ریڈی

صدر وائی ایس آر کانگریس کی مودی سے ملاقات پر تنقید : رگھوویرا ریڈی

حیدرآباد /20 مئی (سیاست نیوز) صدر آندھرا پردیش کانگریس این رگھوویرا ریڈی نے کہا کہ مقدمات سے بچنے کے لئے سیکولرازم کو فراموش کرکے صدر وائی ایس آر کانگریس جگن موہن ریڈی نے نریندر مودی سے ملاقات کی۔ آج میڈیا سے بات کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ انتخابات میں سیکولرازم کا نعرہ بلند کرتے ہوئے مسلمانوں اور عیسائیوں کی تائید حاصل کرنے والے جگن موہن ریڈی کو اچانک بی جے پی کے وزارت عظمی کے امیدوار نریندر مودی سے ملاقات کرنے کی ضرورت کیا تھی؟ اس پر سنجیدگی سے غور کرنے کی ضرورت ہے، جب کہ جگن کو ان کی تائید کرنے والے مسلمانوں اور کرسچنوں کو جواب دینا چاہئے کہ اس ملاقات کے پیچھے آندھرا پردیش کے مفادات کا کونسا خفیہ راز ہے؟۔ انھوں نے کہا کہ دراصل صدر وائی ایس آر کانگریس اپنے مقدمات کو لے کر فکرمند ہیں، کیونکہ تلگودیشم کو آندھرا میں اکثریت حاصل ہوئی ہے

اور وہ این ڈی اے کی حلیف ہے، اس لئے جگن نے نہ صرف نریندر مودی سے ملاقات کی، بلکہ مودی کی جانب سے تائید طلب کرنے سے قبل مسائل کی بنیاد پر این ڈی اے کی تائید کا اعلان کیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ رائے دہی کے بعد کسی بھی جماعت کی تائید نہ کرنے کا جگن نے اعلان کیا تھا اور نتائج کے بعد سیکولرازم کی پالیسی پر عمل پیرا رہنے کا وعدہ کیا تھا، اب اچانک کیا بات ہو گئی کہ جگن مودی کے قدموں میں جھک گئے؟۔ ایسا لگتا ہے کہ جگن موہن ریڈی نے مودی سے ملاقات کرتے ہوئے ان پر عائد مقدمات سے دست برداری کی التجا کی ہے۔ انھوں نے کہا کہ آندھرا پردیش کے نئے دارالحکومت کا انتخاب ہوتے ہی پارٹی آفس کو منتقل کردیا جائے گا اور جون کے پہلے ہفتہ میں پارٹی کا ایک اجلاس طلب کرتے ہوئے پارٹی کی شکست کا جائزہ لینے کے علاوہ مستقبل کی حکمت عملی پر غور کیا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT