Thursday , October 18 2018
Home / شہر کی خبریں / جگن کی سنکلپ یاترا پر سنکرانتی تہوار کا منفی اثر

جگن کی سنکلپ یاترا پر سنکرانتی تہوار کا منفی اثر

قائدین اور عوام کی شرکت میں کمی ، پارٹی کو اقتدار پر غرباء کی مدد کا اعلان
حیدرآباد /15 جنوری ( سیاست نیوز ) صدر وائی ایس آر کانگریس پارٹی و قائد اپوزیشن آندھراپردیش قانون ساز اسمبلی مسٹر وائی ایس جگن موہن ریڈی کی پرجا سنکلپ یاتراپر سنکرانتی تہوار کا اثر ہوا ۔ تہوار کے موقع پر جگن کی پد یاترا میں عوام اور پارٹی قائدین نے تہوار پر اولین ترجیح دی اور عوام کی خاطر خواہ تعداد یاترا میں موجود نہیں تھی اور توقع کے مطابق پارٹی قائدین و عوام شریک نہیں ہوئے ۔ جگن موہن ریڈی نے اپنی یاترا کو جاری رکھتے ہوئے مختلف مقامات پر پارٹی پرچم کشائی انجام دی ۔ علاوہ ازیں نینرو کے مقام پر ڈاکٹر وائی ایس راج شیکھر ریڈی کے مجسمہ کی گلپوشی کرکے خراج عقیدت پیش کیا اور عوام سے خطاب کرتے ہوئے سابق میں راج شیکھر ریڈی نے غریب عوام کیلئے کئی ایک نئی اسکیمات و پروگراموں کو روبہ عمل لایا تھا ۔ جس کے باعث آج بھی عوام میں ڈاکٹر وائی ایس راج شیکھر ریڈی کی ایک خصوصی اہمیت پائی جاتی ہے ۔ اسی طرح آئندہ انتخابات میں وائی ایس آر کانگریس پارٹی اقتدار حاصل کرنے پر غریب عوام کی فلاح و بہبودی پروگراموں کے ساتھ ساتھ عوام کو درپیش مسائل کی عاجلانہ یکسوئی کیلئے اقدامات کرے گی ۔ جگن موہن ریڈی کے ہمراہ منڈل کنوینر مسٹر برہمانندا ریڈی ارکان اسمبلی وائی ایس آر کانگریس پارٹی مسٹر سی بھاسکر ریڈی نارائن سوامی ریاستی پارٹی قائدین ، دامودھر ریڈی ، بھانو کمار ریڈی ضلع پارٹی قائدین چندرا ریڈی پیرومل ریڈی ایس منی ریڈی ، ایم پونک ریڈئ ، گروسوامی ریڈی ، بھاسکر ریڈی اور دیگر کارکنان کثیر تعداد میں موجود تھے ۔ یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ مسٹر وائی ایس جگن موہن ریڈی کی پرجا سنکلپ یاترا چیف منسٹر آندھراپردیش مسٹر این چندرا بابو نائیڈو کے آبائی ضلع و مقام پر جاری ہے ۔ جبکہ چندرا بابو نائیڈو بھی آبائی ضلع و مقام پر ہی سنکرانتی تہوار میں حصہ لے رہے ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT