Thursday , December 13 2018

جھارکھنڈ اسمبلی میں تشکیل تلنگانہ کا خیرمقدم

رانچی ۔ یکم / اگسٹ ( سیاست ڈاٹ کام ) جھارکھنڈ اسمبلی اسپیکر ششانک شیکھر بھوکتا نے نئی ریاست تلنگانہ کی تشکیل کو خوشگوار عمل قرار دیا ۔ مانسون اجلاس کے پہلے روز ایوان سے اپنے خطاب کے دوران انہوں نے کہا کہ تلنگانہ عوام کی انتھک جدوجہد کے نتیجہ میں ریاست تلنگانہ ملک کی 29 ویں ریاست کی صورت میں وجود میں آئی ۔ اس موقع پر انہوں نے آندھراپردی

رانچی ۔ یکم / اگسٹ ( سیاست ڈاٹ کام ) جھارکھنڈ اسمبلی اسپیکر ششانک شیکھر بھوکتا نے نئی ریاست تلنگانہ کی تشکیل کو خوشگوار عمل قرار دیا ۔ مانسون اجلاس کے پہلے روز ایوان سے اپنے خطاب کے دوران انہوں نے کہا کہ تلنگانہ عوام کی انتھک جدوجہد کے نتیجہ میں ریاست تلنگانہ ملک کی 29 ویں ریاست کی صورت میں وجود میں آئی ۔ اس موقع پر انہوں نے آندھراپردیش اور تلنگانہ کے وزرائے اعلی بالترتیب چندرا بابو نائیڈو اور کے چندرشیکھر راؤ کو مبارکباد پیش کی اور کہا کہ انتخابات میں نمایاں کامیابی نے دونوں قائدین کو اپنی اپنی ریاستوں کے اعلی ترین عہدوں پر پہنچایا ۔ انہوں نے توقع ظاہرکی کہ دونوںوزرائے اعلی اپنی اپنی ریاستوں کے عوام کی توقعات پر پورا اتریں گے ۔

کورم کی کمی کے باعث لوک سبھا کی کارروائی ملتوی
نئی دہلی ۔ یکم اگسٹ ( سیاست ڈاٹ کام ) لوک سبھا میں آج شام کورم کی کمی کے باعث کام کاج کو ملتوی کردیا گیا ۔ نئے ایوان میں یہ پہلا موقع رہا ۔ جب ایوان میں خانگی ارکان کے امور پر تبادلہ خیال ہو رہا تھا سی پی ایم کے رکن محمد بدرالدجی خان نے کورم کا مسئلہ اٹھایا جب بی جے ڈی کے بی مہتاب مباحث میں حصہ لے رہے تھے ۔ خان نے کورم پر اصرار کیا جس پر کرسی صدارت پر موجود ارجن چرن سیٹھی نے کورم بیل بجائی ۔ برسر اقتدار جماعت کے کچھ ارکان باہر گئے تاکہ اپنے ساتھیوں کو ایوان میں لاسکیں لیکن وہ کامیاب نہیں ہوسکے ۔ لوک سبھا میں کسی بھی کام کاج کیلئے جملہ ایوان کی رکنیت کے 10 فیصد ارکان کی موجودگی ضروری ہوتی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT